The news is by your side.

Advertisement

اردن : اسپتال میں داخل 6 کورونا مریض دم گھٹنے سے ہلاک

عمان : اردن کے ایک اسپتال میں انتطامیہ کی غفلت سے6کورونا مریض دم گھٹنے کے باعث دم توڑ گئے، افسوسناک واقعے کے بعد وزیر صحت نے عہدے سے استعفیٰ دے دیا۔

اردن کے سالٹ شہر کے ایک سرکاری ہسپتال میں آکسیجن کی معطلی کے باعث کورونا کے چھ مریض چل بسے، واقعے کے بعد اردن کے وزیر صحت نذیرعبیدات مستعفی ہوگئے۔

سالٹ شہر میں نئے کھولے گئے اسپتال میں آئے دن مریضوں کی ہلاکتوں کے باعث عوام میں شدید غم وغصہ بڑھ رہا ہے۔

سان ڈیاگو یونین ٹریبون نے خبر رساں ایجنسی کے حوالے سے بتایا ہے کہ وزیر صحت نے کہا ہے کہ وہ سالٹ پبلک ہسپتال میں ہونے والے واقعہ کی اخلاقی ذمہ داری قبول کرتے ہیں۔ جہاں آکسیجن کی معطلی کے باعث مریض ہلاک ہوئے ہیں۔

حکومتی ترجمان نے کہا ہے کہ وزیر صحت نے وزیر اعظم کی ہدایت پر استعفیٰ دیا ہے۔ مذکورہ واقعے کے بعد اسپتال کے سربراہ بھی مستعفی ہوگئے ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز اسپتال کے انتہائی نگہداشت وارڈ میں آکسیجن کی فراہمی میں ایک گھنٹے تک معطلی رہی جس کے باعث چھ مریض ہلاک ہوئے تھے۔

وزیر صحت نے ٹی وی پر بیان میں کہا کہ آکسیجن کی فراہمی ایک گھنٹے تک معطل رہی جس کے بعد اسپتال کو متبادل نظام پر منتقل کیا گیا تاہم اس وقت مریضوں کی موت ہو چکی تھی۔

انہوں نے کہا کہ ہوسکتا ہے کہ مریضوں کی ہلاکت آکسیجن کی معطلی کا نتیجہ ہو، واقعہ کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

اردن کے شاہ عبداللہ نے اسپتال کا دورہ کیا اس موقع پر سیکیورٹی فورسز نے علاقے کا محاصرہ کیے رکھا۔ اردنی وزیراعظم کے حکم پر پراسیکیوٹر جنرل نے واقعہ کی تحقیقات کا آغازکردیا ہے۔

وزیر اعظم نے عوام سے واقعہ کی شفاف اور جامع تحقیقات کا وعدہ کیا ہے۔ تحقیقات کے نتائج کو عوام کے سامنے لایا جائے گا۔

روئٹرز کے مطابق آکسیجن کی فراہمی میں معطلی سے انتہائی نگہداشت، گائنی یونٹ اور کورونا وائرس کے مریض متاثر ہوئے تھے۔

مقامی رپورٹس میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ آکسیجن کی فراہمی میں معطلی فنی خرابی کا نتیجہ تھی تاہم کسی سرکاری ذرائع نے اس کی تصدیق نہیں کی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں