The news is by your side.

Advertisement

پی ایس ایل : لاہور قلندرز نے سپراوور میں کراچی کنگز کو ہرا دیا

دبئی:  پاکستان سپر لیگ کے 24ویں میچ میں لاہور قلندر نے کراچی کنگز کو سپر اوور میں شکست دے دی، کراچی کنگز نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے لاہور قلندرز کو 164 رنز کا ہدف دیا تھا جو اس نے برابر کردیا،

تفصیلات کے مطابق دبئی میں پاکستان سپر لیگ کا 24واں میچ کراچی کنگز اور لاہور قلندرز کے مابین کھیلا گیا، کنگز کی قیادت عماد وسیم جبکہ قلندرز کی کپتان برینڈن میکولم تھے۔

لاہورقلندرز کی دعوت پر کراچی کنگز نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اوورز میں 5 وکٹوں کے نقصان پر 163 رنز بنائے، بابر اعظم 61 اور لینڈل سیمنز 55 رنز کے ساتھ نمایاں بلے باز رہے جبکہ سہیل خان نے سب سے زیادہ تین وکٹیں لیں، کراچی کنگز کی پہلی وکٹ 19، دوسری 91، تیسری 124، چوتھی 148 اور پانچویں 155 پر گری۔

جواب میں لاہور قلندر نے سنسنی خیز مقابلے کے بعد 8 وکٹوں کے نقصان پر اسکور برابر کردیا جس کے بعد فیصلہ سپر اوور میں کرانے کا فیسلہ کیا گیا، جس میں لاہور قلندر نے کراچی کنگز کو 12رنز کا ہدف دیا۔

دوسرے سپر اور میں کراچی کنگز ایک وکٹ کے نقصان پر صرف 8 رنز بنا سکی، اور لاہور قلندر نے 3 رنز سے کراچی کنگز کو ہرادیا۔

لاہور قلندر کی جانب سے آغا سلمان 50 رنز بنا کر مین آف دی میچ کے حقدار قرار پائے، فخر زمان 28 اور اینٹن ڈیوچ 24رنز بنا کر نمایاں رہے۔ کراچی کنگز کےعثمان خان اور محمد عرفان نے دو دو وکٹیں حاصل کیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

لاہور قلندر اننگز کا خلاصہ

سپر اوور/ کراچی کنگز (سنیل نارائن ) : سیمنز اور کولن انگرام نے کھیل کا آغاز کیا، پہلی بال پر کوئی رن نہ بن سکا، تیسری بال پر لولن انگرام کیچ آؤٹ ہوگئے، نئے آنے والے کھلاڑی شاہد آفریدی نے آخری بال پر چھکا مارا لیکن وہ اپنی ٹیم کو فتح نہ دلوا سکے۔ اس طرح سپر اوور کے اختتام پر کراچی کنگز 8 رن بنا سکی۔اور یہ میچ لاہور قلندر نے جیت لیا۔

سپر اوور/ لاہور قلندر (محمد عامر ) : پہلی بال پر فخر زمان دوسرا رن لینے کی کوشش میں رن آؤٹ ہوگئے۔ نئے آنے والے کھلاڑی ڈیوچ ہیں، ان کے ساتھ میکلم دے رہے ہیں، اوور کی آخری بال پر میکلم رن آؤٹ ہوگئے، اس اوور میں لاہور کا اسکور 11رنز دو کھلاڑی آؤٹ ہے۔

بیسواں اوور (عثمان خان) : کھیل کے آخری اوور میں سہیل اختر کوئی رن بنائے بغیر آؤٹ ہوگئے، اور میکلگن رن آؤٹ ہوئے۔ لاہور کا اسکور8 وکٹوں کے نقصان پر 163 ہوگیا، اسکور برابر ہونے پر میچ کا فیصلہ سپر اوور کے ذریعے کیا جائے گا ۔

انیسواں اوور (محمد عامر) : دوسری بال پر سہیل خان عماد وسیم کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے، دو اوورز میں تین ایم وکٹیں گرنے سے لاہورقلندر کی ٹیم کو مشکلات کا سامنا ہہے اور ٹیم کا اسکور چھ وکٹوں کے نقصان پر 148 رنزہوگیا۔

اٹھارہوں اوور (عثمان خان) :  دوسری بال پر میکلم نے شاندار چھکا لگایا لیکن یہ اوور لاہور کیلیے بہت مہنگا ثابت ہوا، چوتھی بال پر آغا سلمان 50 رنز بنا کر باؤنڈری پر کیچ آؤٹ ہوگئے، اوور کی آخری بال پر برینڈن میکلم 15 رنز بنا کر سیمنز کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے۔ قلندر کا مجموعی اسکور نو رنز کے اضافے سے 5وکٹوں کےنقصان پر 140 رنز ہوگیا۔

سترہواں اوور (محمد عامر) : اس اوور میں لاہور قلندر کے اسکور میں صرف چار رنز کا اضافہ ہوسکا اور مجموعی اسکور تین وکٹوں کے نقٓصان پر131 ہوگیا۔

سولہواں اوور (محمد عرفان) : اوور کے اختتام پر لاہور قلندر کا مجموعی اسکور 13 رنز کے اضافے سے 127 ہوگیا اور اس کے تین کھلاڑی پویلین لوٹ چکے ہیں۔

پندرہواں اوور (عماد وسیم) :دوسری بال پر آغا سلمان نے بہترین چھکا لگا کر اسکور میں دس رنز کا اضافی کیا، اسکور تین وکٹوں کے نقصان پر 114رنز ہوگیا۔

چودہواں اوور (محمد عرفان) : اوور کی چوتھی بال پر سنیل نارائن ایل بی ڈبلیو ہوگئے انہوں نے چھ رن اسکور کیے، ٹیم کا مجموعی اسکور3وکٹوں کے نقصان پر 104 ہوگیا۔

تیرہواں اوور (روی بوپارہ) : اوور کے اختتام پر 7 رنز کے اضافے سے قلندرز کا اسکور دو وکٹوں کے نقصان پر 98رنز ہوگیا۔

بارہواں اوور (عماد وسیم) : اس اوور کی چوتھی بال پر کراچی کنگز کو دوسری اہم کامیابی مل گئی اوپنر فخر زمان 28 رنز بنا کر کولن انگرام کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے۔لاہور کا اسکور 3رنز کے اضافے سے 91 ہوگیا، نئے آنے والے کھلاڑی سنیل نارائن ہیں۔

گیارہواں اوور (روی بوپارہ) : کھیل کے اس اوور میں بھی 6رنز کا اضافہ ہوسکا، اور قلندرز کا اسکور ایک وکٹ پر 88 رنز ہوگیا۔

دسواں اوور (عماد وسیم) : اس اوور میں 6رنز کا اجافہ ہوا اور لاہور کا مجموعی اسکور ایک وکٹ پر 82رنز ہے۔

نواں اوور (شاہد آفریدی) فخر زمان نے شاہد آفریدی کولگاتار ایک چھکا اور چوکا جڑ دیا، 13 رنز کے شادار اضافے کے ساتھ قلندرز کا اسکور 76رنز ایک کھلاڑی آؤٹ ہے۔

آٹھواں اوور (عماد وسیم) کھیل کے اس اوور میں نو رنز کا اضافہ ہوا جس میں آغا سلمان کا ایک چوکا بھی شامل ہے، مجموعی اسکور ایک وکٹ کے نقصان پر 63 رنزہوگیا۔

ساتواں اوور (شاہد آفریدی) اس اوور میں صرف دو رن بن سکے لاہور قلندر کا مجموعی اسکور 54رنز ہوگیا، کریز پر فخر زمان 12 اور آغا سلمان 18 رنز کے ساتھ موجود ہیں۔

چھٹا اوور (محمد عرفان) فخر زمان نے پہلی بال پر ہی ایک زرودار چھکا جڑ دیا، جبکہ آغا سلمان بھی پیچھے نہ رہے اور انہوں نے بھی ایک چوکا لگا دیا، اسکور میں 11رنز کے اضافے سے اسکورایک وکٹ کے نقصان پر 52رنز ہوگیا۔

پانچواں اوور (عثمان شنواری) کھیل کے اس اوور میں چھ رنز کا اضافہ ہوا، لاہور کا اسکور 41 رنز ہے اور اس کا ایک کھلاڑی آؤٹ ہوا ہے۔

چوتھا اوور (محمد عرفان) اوور کی پہلی بال پر محمد عرفان نے کراچی کنگز کیلئے پہلی کامیابی حاصل کرتے ہوئے اینٹن ڈیوچ کو بولڈ کردیا، انہوں نے 14 گیندوں پر 24رنز بنائے۔ لاہور کا مجموعی اسکور35 رنز ہے اور اس کا ایک کھلاڑی پویلین لوٹ چکا ہے۔نئے آنے والے کھلاڑی آغا سلمان ہیں۔

تیسرا اوور: (محمد عامر) ڈیوچ کے دو چوکوں کی مدد سے اسکور میں گیارہ رنز کے اضافے سے قلندر کا مجموعی اسکور 26ہوگیا، لاہور کا کوئی کھلاڑی آؤٹ نہیں ہوا۔

دوسرا اوور (عثمان شنواری) کے اوور میں اینٹن ڈیوچ  نے دو شاندار چوکے لگا کر نو رنز کا اضافہ کیا لاہور کا اسکوربغیر کسی نقصان کے 15رنز ہوگیا۔

  پہلا اوور (محمد عامر)  : لاہور قلندرز کے اوپنرز فخر زمان اور اینٹن ڈیوچ نے کھیل کا آغاز کیا اور پہلے اوور میں ڈیوچ کے چوکے کے ساتھ چھ رن بنالیے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

کراچی کنگز اننگز خلاصہ

بیسواں اوور (شاہین آفریدی) : شاہد آفریدی کریز پر آئے اور دوسری گیند پر شاندار چھکا مارا تاہم اگلی کی گیند پر نوجوان باؤلر نے آفریدی کو کلین بولڈ کر کے پویلین کی راہ دکھائی، مقررہ اوورز میں ٹیم نے پانچ وکٹوں کے نقصان پر 164 رنز بنائے

انیسواں اوور (سہیل خان) : بابر اعظم اوور کی آخری بال پر 61 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے، دس رنز اضافے کے بعد ٹیم کا مجموعی 148 تک پہنچا۔

اٹھارواں اوور (شاہین آفریدی) : تیسری ، چوتھی، پانچویں اور چھٹی گیند پر سنگلز حاصل کرنے کے بعد ٹیم کا مجموعی اسکور 138/3

سترہواں اوور (سہیل خان) بابراعظم نے مسلسل دوسری نصف سنچری بنائی جبکہ دوسری گیند پر انگرام آؤٹ ہوئے، 13 رنز اضافے کے بعد ٹیم کا مجموعی اسکور تین وکٹ کے نقصان پر 134 تک پہنچا۔

سولہواں اوور (شاہین آفریدی) : تین چوکوں اور دو سنگلز کی مدد سے مجموعی اسکور 123/2 پہنچا۔

پندرہواں اوور: کراچی کنگز کے بلے بازوں نے سست روی سے کھیل پیش کرتے ہوئے صرف 4 رنز حاصل کیے، مجموعی اسکور 109/2 تک پہنچا۔

چودہواں اوور (مچل میگلیشن) : پہلی، دوسری، تیسری، چوتھی اور چھٹی بال پر سنلگز حاصل کیے، مجموعی اسکور 105/2 تک پہنچا۔

تیرہواں اوور (یاسر شاہ) : کراچی کنگز نے پانچ رنز حاصل کر کے 2 وکٹوں کے نقصان پر مجموعی اسکور کی سنچری مکمل کی

بارہواں اوور (سہیل خان) : تیسری گیند پر اوپنر سمینز 53 کے انفرادی اور 91 کے مجموعی اسکور پر آؤٹ ہوئے، پانچ رنز اضافے کے بعد مجموعی اسکور 95/2 تک پہنچا۔

گیارہواں اوور (سنیل نارائن) : دوسری، تیسری، پانچویں اور چھٹی بال پر ایک ایک سنگل بنا جس کے بعد مجموعی اسکور 89/1 تک پہنچا۔

دسواں اوور (مچل میگلیشن) : 3 رنز کے بعد مجموعی اسکور 85/1 تک پہنچا۔

نواں اوور ( سنیل نارائن) : لینڈل سیمنز نے 31 گیندوں پر ایک چھکے اور 8 چوکوں کی مدد سے نصف سنچری مکمل کی جبکہ اختتام پر مجموعی اسکور 82/1 تک پہنچا۔

 آٹھواں اوور (شاہین آفریدی) دو چوکوں اور چار سنگلز کے بعد ٹیم کا مجموعی اسکور 78/1 تک پہنچا۔

ساتواں اوور (یاسر شاہ): ایک چھکے اور تین چوکے پڑے، مجموعی اسکور 66/1 تک پہنچا، کراچی کنگز نے مجموعی اسکور کی ففٹی مکمل کی۔

چھٹا اوور (مچل میگلیشن) : دو چوکوں ایک بائی اور دو سنگلز کے بعد مجموعی اسکور 46/1 تک پہنچا۔

پانچواں اوور (سنیل نارائن) : دو چوکوں اور دو سنلگز کی مدد سے دس رنز حاصل ہوئے۔ مجموعی اسکور 36/1

چوتھا اوور (مچل میگلیشن): ایک چوکے اور دو سنگلز کی مدد سے ٹیم کا مجموعی اسکور ایک وکٹ کے نقصان پر 26 تک پہنچا۔

تیسرا اوور (یاسر شاہ) : وکٹ (جوئے ڈین لے) مجموعی اسکور 20/1

دوسرا اوور (سہیل خان) : کراچی کنگز نے ٹیم نے مجموعی اسکور 19 رنز تک پہنچا۔

کراچی کنگز نے بیٹنگ کا آغاز کیا تو لینڈل سمینز اور جوئے ڈین میدان میں اترے، پہلے اوور میں تین چوکوں کی مدد سے ٹیم کا مجموعی اسکور 12 رنز تک پہنچا۔

برینڈن میکولم نے ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کا فیصلہ کیا، رمیز راجہ سے گفتگو کرتے ہوئے اُن کا کہنا تھا کہ گزشتہ میچ کی طرح اس میچ میں بھی فتح حاصل کرنے کی بھرپور کوشش کریں گے۔

کراچی کنگز کے کپتان عماد وسیم نے ٹاس کے بعد گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی، گزشتہ روز کی طرح اچھا کھیل پیش کر کے کوالیفائنگ راؤنڈ تک رسائی حاصل کرنے کی پوری کوشش ہے۔

 اسکواڈ

کراچی کنگز : جوئے ڈین لے، لین ڈل سیمنز، بابر اعظم، کولن انگرام، روی بھوپارا، محمد رضوان، عماد وسیم (کپتان)، شاہد آفریدی، محمد عامر، محمد عرفان (جونیئر)، عثمان خان شنواری

لاہور قلندرز: فخر زمان، آن ٹن ڈیوچ، برینڈن میکولم، دنیش رام دین، گلریز صدف، آغا سلمان، سہیل اختر، سہیل خان، سنیل نارائن، مچل میگلیشن، یاسر شاہ

واضح رہے کہ کراچی کنگز نے اب تک ساتھ میچز کھیلے اور ٹیم پوائنٹس ٹیبل پر 9 پوائنٹس کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے، اگلے مرحلے میں کوالیفائی کرنے کے لیے عماد الیون کو آج کا میچ جیتنا ضروری ہے۔

دوسری جانب لاہور قلندرز کی ٹیم نے اب تک 7 میچز کھیلے جن میں سے انہیں صرف ایک میں فتح ملی اور 6 میں شکست کا سامنا کرنا پڑا، اگر پانچویں نمبر پر موجود پشاور زلمی کو شکست ہوجاتی ہے اور قلندرز کی ٹیم آج فتح حاصل کرلیتی ہے تو اگلے مرحلے میں کوالیفائی کرنے کے امکانات روشن ہوسکتے ہیں۔

میچ کی مکمل اپ ڈیٹ: کراچی کنگز کی شاندار فتح، ملتان سلطانز کو 63 رنز سے شکست

کراچی کنگز نے گزشتہ روز کھیلے جانے والے میچ میں کراچی کنگز نے ایونٹ کا سب سے بڑا مجموعہ  188/3 اسکور بورڈ پر سجایا تھا، ملتان سلطانز ہدف کو عبور کرنے میں ناکام رہی تھی اور عماد الیون نے مخالف ٹیم کو 63 رنز سے شکست دی تھی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانےکے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں