بدھ, مئی 22, 2024
اشتہار

’بیٹا امریکا اور بیٹی کراچی میں ڈاکٹر ہیں‘: گرفتار ڈکیت کے حیران کُن انکشافات

اشتہار

حیرت انگیز

کراچی میں فیروز آباد پولیس کے ہاتھوں گرفتار فوڈ چینز اور میڈیکل اسٹورز پر ڈکیتی کرنے والے ملزم نے حیران کُن انکشافات کر دیے۔

ملزم کی شناخت شہریار کے نام سے ہوئی جس کا بیٹا امریکا جبکہ بیٹی کراچی میں ڈاکٹر ہے۔ ملزم نے پولیس کو بتایا کہ پولیس اہلکار کی پینٹ چوری کی اور پستول پشاور سے خریدا، پولیس ناکوں سے بچنے کیلیے پولیس اہلکار کا حلیہ بنا رکھا تھا۔

شہریار نے کراچی کے مختلف علاقوں میں 18 سے زائد وارداتیں کیں۔ اس نے بتایا کہ 3 سے 4 وارداتیں کرنے کے بعد لاہور چلا جاتا تھا۔

- Advertisement -

گرفتار ملزم پولیس اہلکار کی شہادت میں بھی ملوث ہے اور اس جرم میں عمر قید کی سزا بھی کاٹ چکا ہے۔

ملزم نے بتایا کہ وہ روزانہ ایک واردات کرتا تھا۔ وہ پیسے ختم ہونے پر کراچی واپس آتا اور لوٹ مار کرتا، اسے ہوٹل آئی سافٹ ویئر کی مدد سے گرفتار کیا گیا۔

اس سے قبل مارچ میں اسٹریٹ کرائم کی درجنوں وارداتوں میں ملوث 2 ملزمان کو پولیس نے گرفتار کیا گیا تھا جو زیادہ تر وارداتیں شام کو بجلی کی لوڈشیڈنگ کے وقت کرتے تھے۔

ایس ایس پی امجدحیات نے بتایا تھا کہ ملزمان میں ذیشان ساغر اور عدنان عرف ڈان شامل ہیں، ملزمان سے اسلحہ اور 14 موبائل فونز بھی برآمد ہوئے۔

امجد حیات کا کہنا تھا کہ ملزمان نے دوران تفتیش کئی انکشاف کیے، 4 رکنی ڈکیت گروہ چھینے گئے موبائل احمد نیازی کو فروخت کرتا ہے اور ملزمان لوٹ مار میں مزاحمت پر گولیاں چلانے سے دریغ نہیں کرتے۔

انہوں نے بتایا تھا کہ چند روز قبل بغدادی میں ڈکیتی مزاحمت پر شہری پر فائرنگ کی، چھیننے ہوئے موبائل فونز کے آئی ایم ای آئی حسین افغانی تبدیل کرتا ہے، فی فون آئی ایم ای آئی تبدیل کرنے کے 5 سے 8 ہزار دیے جاتے ہیں۔

ملزمان کا واردات میں استعمال اسلحہ 10 ہزار میں راشد سے خریدنے کا انکشاف کیا تھا۔

Comments

اہم ترین

نذیر شاہ
نذیر شاہ
نذیر شاہ کراچی میں اے آر وائی نیوز کے کرائم رپورٹر ہیں

مزید خبریں