The news is by your side.

Advertisement

کرینہ کپور ہندو انتہا پسندوں کے نشانے پر آگئیں

ممبئی: بھارت میں ہندو انتہا پسندوں نے بالی وڈ کی معروف اداکارہ کرینہ کپور کو آڑے ہاتھوں لے لیا اور ان کے بائیکاٹ کا مطالبہ کیا جا رہا ہے۔

انڈین میڈیا کے مطابق کرینہ کپور حال ہی میں جیولری کے ایک اشتہار میں نظر آئی ہیں۔ اشتہار کی تصاویر میں اداکارہ کو ماتھے پر بغیر بندی لگائے دیکھا جا سکتا ہے۔

اس پر ہندو انتہا پسند آگ بگولہ ہوگئے۔ ان کا کہنا ہے کہ کرینہ کپور کا بندی نہ لگانا ہندو رسم و رواج کو ختم کرنے کی سازش ہے۔

ہندو انتہا پسندوں نے یہ بھی کہا کہ لوگ کرینہ کپور کا بائیکاٹ کریں۔

اس سے قبل کرینہ کپور کی گاڑی کی ٹکر سے ایک فوٹو گرافر زخمی ہوگیا تھا جس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی۔

ویڈیو میں کرینہ کپور کو اپنے ڈرائیور پر غصے کی حالت میں چیختے دیکھا جا سکتا تھا۔ ڈرائیور نے کرینہ کپور کی تصاویر لینے کے دوران فوٹو گرافر کا پاؤں کچل دیا تھا۔

گاڑی کا ٹائر جب فوٹو گرافر کے پاؤں پر چڑ گیا تو کرینہ کپور نے غصے میں ڈرائیور کو اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ ”سنبھالو یار، پیچے جاؤ یار!“

 

View this post on Instagram

 

A post shared by Viral Bhayani (@viralbhayani)

یہ واقعہ اُس وقت پیش آیا تھا جب کرینہ کپور کار حادثے میں زخمی ہونے والی ملائکہ اروڑا کی عیادت کے لیے ان کی رہائش گاہ پہنچی تھیں۔ اداکارہ کی آمد پر فوٹو گرافر کی بڑی تعداد ملائکہ اروڑا کے گھر کے باہر موجود تھی۔

اداکارہ نے زخمی ہونے والے فوٹو گرافر کو کہا تھا کہ ”یہی وجہ ہے کہ آپ کو اس طرح نہیں بھاگنا چاہیے تھا۔“

Comments

یہ بھی پڑھیں