site
stats
سندھ

فوجی عدالتوں کے قیام میں‌ حکومت خود ہی سنجیدہ نہیں، خورشید شاہ

حیدرآباد: قومی اسمبلی کے پارلیمانی لیڈر و پیپلز پارٹی کے رہنما خورشید شاہ نے کہا ہے کہ فوجی عدالتوں کا قیام عارضی حل ہے ان کے قیام کے لیے مستقل بنیادوں پر پلاننگ کرنا ہوگی۔

حیدرآباد میں میڈیا سے گفت گو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دہشت گردی مائنڈسیٹ ہے جسے گولی سے ختم نہیں کیا جاسکتا،افغانستان دہشت گردوں کو پناہ دے رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی ملک کی خاطر ہر کام کرنے کے لیے تیار ہے، ماضی میں دو سال کے لیے فوجی عدالتوں کی حمایت کی حکومت اگر فوجی عدالتوں کے قیام میں توسیع پر سنجیدہ ہوتی تو دسمبر میں رابطہ کرتی

انہوں نے کہا کہ نیپ پر عمل نہیں ہوا اور نہ ہی نیکٹا کا کوئی اجلاس ہوا، وزیراعظم پارلیمنٹ میں آکر عوام کو اعتماد میں لینے کو تیار نہیں، پنجاب اور سندھ میں رینجرز اختیارات میں فرق ہے۔

واضح رہے کہ فوجی عدالتوں کے قیام پر پی پی نے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے نو مطالبات پیش کیے ہیں کہ انہیں پورا کرنے کے بعد یہ عدالتیں قائم کردی جائیں، یہ مطالبات فوجی عدالتوں میں اصلاحات سے متعلق تھے۔

پیر کو کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے کہا تھا کہ ہم فوجی عدالتوں کے قیام کے مخالف نہیں ہیں تاہم کچھ تحفظات ہیں جسے دور کرنے کے لیے نو مطالبات پیش کردیے ہیں۔

یہ پڑھیں: فوجی عدالتوں کے مخالف نہیں، 9 مطالبات پیش کردیے، زرداری

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top