The news is by your side.

مغوی بچی نے9سال بعد اپنے گھر والوں کو ڈھونڈ لیا، لیکن کیسے؟

ممبئی : انٹرنیٹ کی مدد سے9 سال قبل اغوا ہونے والی7 سالہ بچی اپنے والدین سے مل گئی، پولیس نے اغوا میں ملوث جوڑے کو گرفتار کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی ریاست مہاراشٹرا کے شہر ممبئی سے سال 2013 میں اغوا ہونے والی سات سالہ بچی جس کی عمر اب 16سال ہے۔ پوجا گاڈ نے انٹرنیٹ پر اپنی بچپن کی تصویر دیکھی جو اس کے اہل خانہ سے ملنے کا ذریعہ بنی۔

بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق پوجا گاڈ کو ایک جوڑے نے اس وقت اغوا کرلیا تھا جب وہ محض سات سال کی تھی۔ ملزمان اس کے محلے کے ہی رہائشی تھے۔

ممبئی کے علاقے جوہو کی کچی آبادی میں مقیم مغویہ پوجا گاڈ کے اغوا کے حوالے سے اس کے بھائی روہیت نے میڈیا کو بتایا کہ پوجا کے اغوا کا واقعہ 22 جنوری 2013 کو پیش آیا جب وہ میرے ساتھ اسکول جارہی تھی۔

بھائی روہیت کے مطابق ہم گھر سے اسکول کے لیے اکٹھے ہی نکلے تھے تاہم میں تھوڑا سا آگے چل رہا تھا کہ ایک موقع پر میں اسے دیکھنے کے لیے واپس مڑا لیکن وہ نظر نہ آئی۔

اسکول پہنچ کر جب میں اس کے کلاس روم میں گیا تو کلاس ٹیچر سے اس کے بارے میں پوچھا جس پر انہوں نے جواب دیا کہ پوجا اسکول ہی نہیں آئی تھی۔

پولیس کے مطابق مغوی پوجا کو اس کے محلے دار ہیری ڈی سوزا اور اس کی بیوی سونی نے پوجا کو اغوا کیا تھا اور اسے ممبئی سے باہر کسی مقام پر منتقل کر دیا گیا۔

رپورٹ کے مطابق مغویہ پوجا جسے اپنے خاندان کے افراد کے بارے میں زیادہ یاد نہیں تھا تاہم اسے یہ ضرور علم تھا کہ وہ اس جوڑے کی اولاد نہیں ہے۔

پوجا نے انٹرنیٹ پر ایک گمشدگی اشتہار دیکھا کہ جس میں لگی بچی کی تصویر اسے اپنی لگی، جس کے بعد اس نے اشتہار پر درج ٹیلی فون نمبر پر رابطہ کیا۔

پوجا کی ماں نے اپنی بچی کی آواز پہچان لی اور اس طرح 9 سال صبر کے بعد والدین کو ان کی مغوی بیٹی مل گئی، بعد ازاں پولیس نے ملزمان جوڑے ڈی سوزا اور اور اس کی بیوی کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں