site
stats
اہم ترین

کلبھوشن اناڑی حرکتوں کی وجہ سے پکڑا گیا،بھارتی اخبار کا انکشاف

نئی دلی : کلبھوشن یادیو جاسوس اوررا کا ایجنٹ ہے ، بھارتی اخبار نے بھانڈا پھوڑدیا اور اندرونی کہانی بیان کردی۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی اخبار نے بھارتی دہشت گرد کلبھوشن سے متعلق اندرونی کہانی بیان کردی، جس کے مطابق کلبھوشن را کا ایجنٹ اور جاسوس کے طور پر کام کرتا رہا، کلبھوشن کو تعینات کرنے پر را کے 2افسران کو تحفظات تھے۔

بھارتی اخبارنے اندرونی کہانی بیان کرتے ہوئے کہا کہ راکے دوافسرکلبھوشن کے پاکستان میں کام کے مخالف تھے، راکے سابق سربراہان کا کہنا تھا کلبھوشن کی تعیناتی میں بنیادی اصول نظراندازکئے گئے۔

بھارتی اخبار نے انکشاف کیا کہ کلبھوشن پاکستان میں جاسوسی کی اہلیت نہیں رکھتا تھا، یہی وجہ ہے کہ اپنی اناڑی حرکتوں کی وجہ سے پکڑا گیا۔

اخبارکے مطابق ایران،پاکستان ڈیسک پرکام کرنیوالے افسران کلبھوشن کی تعیناتی میں معاون ثابت ہوئے۔

اس خبر کے بعد بھارتی اخبارکو سچ بولنا مہنگا پڑگیا اور شدید دباؤ ڈال کر خبر ہٹوا دی گئی۔

دوسری جانب سابق سربراہان را کا کہنا تھا کہ کلبھوشن کی تعیناتی میں بنیادی اصولوں کو نظر انداز کیا گیا۔


مزید پڑھیں :  را کے لئے کام کررہا تھا، حیرت ہے میرا خفیہ بھارتی ادارہ مجھے تسلیم نہیں کرتا، کلبھوشن


یاد رہے  بھارتی دہشت گرد کلبھوشن نے اپنے ویڈیو بیان میں کہا تھا کہ بھارتی عوام کو بتانا چاہتا ہوں کہ بھارتی بحریہ کاکمیشن افسرہوں، میراکمیشن ختم نہیں ہوا، را کے لئے کام کررہا تھا، حیرت ہے میرا خفیہ بھارتی ادارہ مجھے تسلیم نہیں کرتا۔

کلبھوشن کا مزید کہنا تھا کہ میں نےاپنی والدہ اوراہلیہ کی آنکھوں میں خوف دیکھا، بھارتی سفارتکارنےمیری والدہ کیساتھ بدتمیزی کی، بھارتی سفارتکار میری والدہ پر چلا اور انھیں دھمکارہاتھا، جس پرافسوس ہوا۔

واضح رہے کہ کلبھوشن یادیو اس وقت پاکستان میں قید ہے، بھارتی دہشتگرد کو بلوچستان سے گرفتار کیا گیا تھا، جس کے بعد اس نے پاکستان میں دہشتگرد کارروائیاں کرنے کا اعتراف کیا تھا۔

پاکستان کی فوجی عدالت نےکلبھوشن کوپھانسی کی سزاسنا رکھی ہے، جس پر بھارت نے دس مئی کو عالمی عدالتِ انصاف کا دروازہ کھٹکھٹایا اور سزائے موت پر عملدرآمد روکنے کی درخواست دائر کی تھی۔


مزید پڑھیں : والدہ، اہلیہ سےملاقات کرانے پرپاکستان کاشکرگزارہوں، کلبھوشن یادیو


جس کے بعد عالمی عدالتِ انصاف نے کلبھوشن کیس میں اپنا فیصلہ سناتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان بھارت کو کلبھوشن تک قونصلر رسائی دے‘ اور امید ہے کہ پاکستان عالمی عدالت کا مکمل فیصلہ آنے تک کلبھوشن کو سزا نہیں دی جائے گی۔

ستمبر 2017 میں بھارت نےعالمی عدالت میں کلبھوشن کیس پر تحریری جواب داخل کیا جبکہ پاکستان نے دسمبر 2017 کوجوابی دعوی میں بھارتی الزامات کومسترد کردیا تھا۔

کلبھوشن کیس کی سماعت آئی سی جے میں اب جنوری 2018 میں ہونے کا امکان ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پرشیئر کریں۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top