site
stats
اہم ترین

براڈ کاسٹنگ ادارے ڈی ٹی ایچ کے اہل قرار، نیلامی دوبارہ کرنے کا حکم

لاہور: ہائی کورٹ براڈ کاسٹ اداروں کو ڈی ٹی ایچ ٹیکنالوجی کے لائسنس کا اہل قرار دیتے ہوئے ڈی ٹی ایچ ریگولیشن کی شق 12 کی سب سیکشن 3 کو کالعدم قرار دے دیا اور حکم دیا ہے کہ ڈی ٹی ایچ کی نیلامی دوبارہ کی جائے۔


اسی سے متعلق: پاکستان کے پہلے3ڈی ٹی ایچ لائسنسزکی14ارب79کروڑ میں نیلامی


لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے 33 صفحات پر مشتمل فیصلہ سنایا جس میں براڈ کاسٹ اداروں کو ڈی ٹی ایچ ٹیکنالوجی کے لائسنس کا اہل قرار دے دیا۔ عدالت نے براڈ کاسٹ اداروں کو لائسنس جاری نہ کرنے کے حوالے سے ڈی ٹی اہچ ریگولیشن کے آرٹیکل 12 کی ذیلی شق 3 کو کالعدم قرار دے دیا۔


یہ بھی پڑھیں: پیمرا کو ڈی ٹی ایچ لائسنس کی نیلامی کی مشروط اجازت


عدالت نے فیصلے میں قرار دیا کہ براڈ کاسٹ ادارے ڈسٹری بیوشن کا کردار ادا کر سکتے ہیں ساتھ ہی عدالت نے پیمرا کو لائسنسوں کے اجرا کے لیے از سر نو نیلامی کے احکامات بھی جاری کیے۔

قبل ازیں درخواست گزاروں کی وکیل عاصمہ جہانگہر نے موقف اختیار کیا تھا کہ پیمرا قوانین کے تحت ایک براڈ کاسٹ ادارہ 4 میڈیا چینلز کے لائسنس رکھ سکتا ہے، قانون میں ڈی ٹی ایچ ٹیکنالوجی کے لائسنس حاصل کرنے پر کوئی پابندی نہیں ہے مگر اس کے باوجود براڈ کاسٹ اداروں کو پیمرا کی جانب سے یہ لائسنس جاری نہیں کیے جا رہے۔


یہ ضرور پڑھیں: ڈی ٹی ایچ آخر ہے کیا؟


سرکاری وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا تھا کہ پیمرا ریگولیشن کی شق 32 کے تحت ڈی ٹی ایچ ٹیکنالوجی کے لائسنس کیبل آپریٹرز ہی حاصل کرسکتے ہیں اگر براڈ کاسٹ اداروں کو لائسنس جاری کر دئیے جائیں تو ان کی اجارہ داری قائم ہو جائے گی جو کہ مسابقتی قوانین کی خلاف ورزی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top