The news is by your side.

Advertisement

درخواست کی سماعت کیوں کریں؟ مشرف کے وکیل سے مزید دلائل طلب

لاہور : لاہور ہائی کورٹ نے آئین شکنی کیس کا فیصلہ محفوظ کرنے کے خلاف درخواست پر سابق صدر پرویز مشرف کے وکیل کو کل مزید دلائل دینے کی ہدایت کر دی،  پرویز مشرف کے خلاف آئین شکنی کیس کا فیصلہ 28 نومبر کو سنایا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں آئین شکنی کیس کا فیصلہ محفوظ کرنے کے خلاف سابق صدر پرویز مشرف کی درخواست پر سماعت ہوئی ، جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے درخواست پر سماعت کی، عدالت نے سابق صدرکے وکیل کو درخواست قابل سماعت ہونے پر کل مزید دلائل دینے کی ہدایت کر دی۔

یاد رہے پرویزمشرف کی جانب سے درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ خصوصی عدالت نے انیس نومبر کو مؤقف سنے بغیر کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا، وہ بیماری کی وجہ سےبیرون ملک زیر علاج ہیں ، لہذا سپریم کورٹ کے فیصلوں کے مطابق کیس کی دوبارہ سماعت شروع کی جائے اور فیصلہ محفوظ کرنے کا حکم معطل کیا جائے۔

سابق صدر نے یہ استدعا بھی کی کہ ان کے تندرست ہونے تک مقدمہ کو ملتوی کرنے کا حکم دیا جائے اور ان کی صحت کے تعین کے لئے غیرجانبدار میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کا حکم بھی دیں۔

مزید پڑھیں : پرویزمشرف کے خلاف آئین شکنی کیس کا فیصلہ محفوظ ، 28 نومبر کو سنایا جائے گا

یاد رہے 19 نومبر کو خصوصی عدالت نے سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف آئین شکنی کیس کا فیصلہ محفوظ کیا تھا، جو 28 نومبر کو سنایا جائے گا، فیصلہ یک طرفہ سماعت کے نتیجے میں سنایا جائے گا۔

عدالت نے پرویز مشرف کے وکلا کو دفاعی دلائل سے روک دیا تھا اور پراسیکیوشن کی نئی ٹیم مقرر کرنے کا حکم دیا تھا ، نئی ٹیم مقرر کرنے میں تاخیر پر عدالت نے بغیر سماعت فیصلہ محفوظ کیا، عدالت کا کہنا تھا کہ مشرف کے وکیل چاہیں تو 26 نومبر تک تحریری دلائل جمع کرادیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں