The news is by your side.

Advertisement

ماہرہ خان خواتین پر تشدد کے خلاف مہم کا حصہ بن گئیں

کراچی: پاکستانی شوبز انڈسٹری کی معروف اداکارہ ماہرہ خان خواتین پر تشدد اور جنسی ہراسانی کے خلاف مہم کا حصہ بن گئیں۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق معروف پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان نے خواتین پر تشدد اور جنسی ہراسانی کے خلاف مہم کا حصہ بننے پر ویڈیو پیغام میں کہا کہ مجھے دولت مشترکہ کی ’نو مور‘ مہم کا حصہ بننے پر فخر ہے۔

اداکارہ کا کہنا تھا کہ سب کو تشدد کے خلاف کھڑا ہونا ہوگا، مزید نہیں، نہ مزید الزامات اور نہ مزید بہانے چلیں گے۔

جنسی ہراسانی، گھریلو تشدد اورنہیں۔ دنیا بھرمیں ہرتین میں سے ایک خاتون ان مسائل کا نشانہ بنتی ہے۔ ہم سب کو آگے آنا ہوگا اور ان مسائل کے خلاف کھڑا ہونا ہوگا۔

ماہرہ خان کا کہنا تھا کہ کورونا وبا کے باعث ہونے والے لاک ڈاؤن میں مسائل مزید بدتر ہوگئے ہیں اور ہم نے لاک ڈاؤن کے دوران تشدد کے ان واقعات میں مزید اضافہ دیکھا۔

View this post on Instagram

We must act now. The problem is deep rooted. It’s the mindset that needs to be tackled. Shame on those who commit the crime. Shame on us, who remain silent. Our curriculums need to be changed. Our narratives in our dramas/films need to revisited. We need to be mindful of what we teach our children and what we put out. Join the conversation. Violence against women and girls ( in a lot of cases men and boys) is a hidden pandemic which destroys lives, communities and economies around the world. The heinous rape that happened on the motorway is a clear indication of this. As a response to this global crisis, @commonwealth_sec and @nomoreorg have launched the #CommonwealthSaysNOMORE digital portal on 9 September, which will provide the 54 Commonwealth member countries with tools and resources to help end domestic and sexual violence against women and girls. My name is Mahira Khan and today I say NO MORE. No more Shame, no more Excuses and no more Blame. 🙏🏼 🇵🇰 @commonwealth_sec and @nomoreorg #Nomore #Nomoreshame #nomoreexcuses #nomoreblame

A post shared by Mahira Khan (@mahirahkhan) on

اداکارہ نے کہا کہ ہم سب صحیح کرسکتے ہیں اور ہمیں کرنا چاہئے، ایک طویل عرصے تک ہمارے معاشرے نے اس مسئلے سے نمٹنے کے لیے کافی اقدامات نہیں کیے۔ برائے مہربانی ہمارا ساتھ دیجیے۔ اس مسئلے پر کھل کر بات کیجیے۔

ماہرہ نے ویڈیو کے ساتھ کیپشن میں خواتین، بچوں، بچیوں اور لڑکوں کے ساتھ ہونے والے ظلم و زیادتی ، تشدد اور ہراسانی کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا اب ہمیں ایکشن لینا پڑے گا کیونکہ مسائل کی جڑیں بہت مضبوط ہوچکی ہیں۔ یہ وہ ذہنیت ہے جس سے نمٹنے کی ضرورت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ان تمام لوگوں کو شرم آنی چاہیئے جوجرائم کے مرتکب ہوتے ہیں، ہم لوگوں کو شرم آنی چاہئے جو مسلسل خاموشی اختیارکیے ہوئے ہیں، ہمارا نصاب تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ ہمارے ڈراموں، فلموں میں ہمارے بیانات پر دوبارہ نظر ڈالنے کی ضرورت ہے، آئیں ہمارے ساتھ اس میں شامل ہوں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں