ٹرمپ کے تارکین وطن پر پابندی کے فیصلے نے میرا دل توڑدیا، ملالہ یوسف -
The news is by your side.

Advertisement

ٹرمپ کے تارکین وطن پر پابندی کے فیصلے نے میرا دل توڑدیا، ملالہ یوسف

لندن: پاکستانی نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی کا کہنا ہے کہ امریکی صدر کے تارکین وطن اور سات مسلم ملکوں کے افراد کی امریکا میں داخلے پر پابندی کے فیصلے نے میرا دل توڑ دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی صدر ٹرمپ کے تارکین وطن اور سات مسلم ملکوں کے افراد کی امریکا میں داخلے پر پابندی کے حکم نامہ پر نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی نے افسوس کا اظہار کیا ہے۔

malal-2

ملالہ یوسف زئی نے کہا کہ تارکین وطن افراد پر پابندی کے فیصلے نے میرا دل توڑ دیا ہے، صدر ٹرمپ تشدد اور جنگ سے متاثرہ خواتین اور بچوں پر دروازے بند کررہے ہیں، دنیا میں بڑا بے یقینی کا دور ہے ، میں امریکی صدر ٹرمپ سے اپیل کرتی ہوں کہ وہ دنیا میں سب سے بے بسی کا شکار بچوں اور انکے اہل خانہ سے منہ نہ پھیریں۔

order

ملالا کا مزید کہنا ہے کہ میرا دل ٹوٹ گیا ہے کہ وہ شامی پناہ گزینوں کے بچوں جو 6 سال سے خانہ جنگی کا شکار ہے ، اس میں ان کی خود کی کوئی غلطی نہیں، ان کے ساتھ امتیازی سلوک کیا جارہا ہے۔

ملالہ نے امریکی صدر ٹرمپ سے درخواست کی ہے کہ وہ اپنے فیصلے پر نظر ثانی کریں۔

یاد رہے کہ نو اکتوبر 2012 کو دہشتگردوں نے اسکول وین میں بیٹھی ملالہ پر قاتلانہ حملہ کیا تھا، حملے میں ملالہ یوسف زئی کو سر پر ایک گولی لگی تھی، جس کے بعد ملالہ کو علاج کیلئے برطانیہ منتقل کیا گیا تھا۔

ملالہ یوسف زئی کو سال 2014 میں بچوں کی تعلیم کے لئے جدوجہد کرنے والی پاکستانی طالبہ ملالہ یوسف زئی اور چائلڈ لیبر کے خلاف جنگ کرنے والے بھارتی سماجی کارکن کیلاش ستیارتھی کو مشترکہ طورپر امن کے نوبل ایوارڈ سے نوازا گیا تھا۔


مزید پڑھیں : امریکی صدر نے تارکین وطن اور 7 مسلم ممالک کے داخلے پر پابندی کے حکم نامہ پر دستخط کردیئے


واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے تارکین وطن اور 7مسلم ممالک کے شہریوں کی امریکہ میں داخلے پر پابندی کے حکم نامہ پر دستخط کردیئے ہیں، ڈونلڈٹرمپ کا کہنا ہے کہ ایگزیکٹو آرڈر کا مقصد شدت پسندوں کو امریکا سے دور رکھنا ہے اور امریکی فوج کی تعمیر نو ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں