site
stats
پاکستان

خواجہ اظہار الحسن پر بے بیناد الزامات ہیں ‘ وکلا

کراچی: انسداد دہشت گردی کی عدالت میں اشتعال انگیز تقریر کیس کی سماعت ہوئی، خواجہ اظہار کےوکلا نے الزامات کو بے بیناد قراردے دیا.

تفصیلات کے مطابق انسداد دہشت گردی کی عدالت میں اشتعال انگیز تقریرکیس کی سماعت ہوئی، جس میں خواجہ اظہار الحسن ،روٴف صدیقی،عبدالرزاق سمیت دیگرکے مقدمات سنے گئے.

وکلا نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ خواجہ اظہار الحسن اور دیگر کے خلاف مقدمات بے بنیاد ہیں وکلا نے کہا کہ ایک شخص نے اس بنیاد پر مقدمہ درج کرایا کہ اس نےسنا، دیکھا نہیں ہے ، جو کہ ایک غیرمنطقی بات ہے، عدالت نے وکلا کے دلائل سننے کے بعد سماعت 11فروری تک ملتوی کردی.

دوسری جانب ایم کیو ایم لندن کے پروفیسرظفر،امجد اللہ کے خلاف بھی مقدمے کی سماعت ہوئی ، جس میں امجد اللہ کی ضمانت پر پولیس فائل نہ ہونے سے دلائل مکمل نہ ہوسکے، جس کے سبب ایم کیو ایم لندن کے رہنماوٴں کے مقدمے کی سماعت 4فروری تک ملتوی کردی گئی۔

علاوہ ازیں اےٹی سی میں سانحہ 12مئی کے 3مقدمات کی سماعت ہوئی جس میں کامران فاروق،عدنان احمدسمیت52 مفرورملزموں کےناقابل ضمانت وارنٹ جاری کردیے گئے، بعد ازاں عدالت نے سماعت 11فروری تک ملتوی کردی۔

واضح رہے سانحہ 12 مئی کیس میں میئر کراچی وسیم اختر بھی  تین مقدمات میں ضمانت پرہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top