site
stats
پاکستان

زیادتی کیس، بچی کو رکشا ڈرائیور کے ساتھ دیکھا، عینی شاہد

کراچی : میڈیکل رپورٹ نے بچی کے ساتھ زیادتی کی تصدیق کی ہے ، چھ سالہ بچی کے گردن ، سینے پیٹ پر زخم کے نشانات ہیں، عینی شاہد کا کہنا ہے کہ بچی کو آخری بار رکشا ڈرائیور ساجد کے ساتھ دیکھا گیا تھا.

تفصیلات کے مطابق کورنگی سے ملنے والی بچی سے زیادتی کیس میں خاتون عینی شاہد سامنے آگئی ہیں، خاتون نے اپنے بیان میں پولیس کو بتایا ہے کہ بچی کو آخری بار رکشا ڈرائیور کے ساتھ دیکھا تھا جو کہ تاحال غائب ہے۔

پولیس نے خاتون کے بیان کے بعد ساجد نامی رکشا ڈرائیور کے گھر پر چھاپہ مارا جس پر رکشا ڈرائیور کے اہلِ خانہ نے بتایا ہے کہ وہ کل رات سے گھر نہیں آیا ہے جس کے بعد پولیس نے مختلف مقامات پر چھاپہ مار کارروائی کرتے ہوئے ملزم کی تلاش کا آغاز کردیا ہے۔

دریں اثناء گذشتہ روز کورنگی نالے سے زخمی حالت میں ملنے والی بچی کی میڈیکل رپورٹ نے بچی کے ساتھ زیادتی کی تصدیق کر دی ہے، ایم ایل او نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ بچی کی گردن ، سینے اور پیٹ پر  تیز دھار آلے سے زخم لگائے گئے ہیں۔

ایڈیشنل پولیس سرجن کے مطابق بچی کا معائنہ خاتون ڈاکٹر نے کیا، انہوں نے کہا کہ میڈیکل رپورٹ میں بچی کے ساتھ زیادتی کی تصدیق کی گئی ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ بچی کا بیان ریکارڈ کرلیا گیا ہے، زیادتی کا شکار ہونے والی بچی طوبیٰ کورنگی کی رہائشی ہیں اور اس کا تعلق سندھ کے اندرونی شہر مٹھی سے ہے، وہ کورنگی کے نجی اسکول میں زیر تعلیم ہے۔

یہاں پڑھیں :سویرا زیادتی کیس: چیف جسٹس نے از خود نوٹس لے لیا

دوسری جانب سپریم کورٹ نے بچی زیادتی کیس کا ازخود نوٹس لے لیا ہے اور آئی جی سندھ کو 48گھنٹوں میں رپورٹ جمع کرانے کی ہدایت کی ہے. اراکین سندھ اسمبلی نے چھ سالہ بچی کے ساتھ زیادتی کی شدت الفاظ میں مذمت کی اور ملزمان کو کیفر کردار تک پہچانے کا مطالبہ کیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top