site
stats
اہم ترین

نائن زیرو کے سیکیورٹی انچارج کا بیان، حکیم سعید قتل کیس کے بارے میں انکشافات

کراچی: ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو کے سیکیورٹی انچارج منہاج قاضی کا پولیس کی حراست کے دوران تفتیشی بیان منظر عام پر آگیا جس میں انہوں نے حکیم محمد سعید قتل کیس کے بارے میں انکشافات کیے ہیں۔

ایم کیو ایم کے مرکز نائن زیرو کے سیکیورٹی انچارج منہاج قاضی نے پولیس حراست کے دوران اہم بیان دیتے ہوئے سابق گورنر سندھ حکیم محمد سعید کے قتل کی منصوبہ بندی کرنے والوں کے نام بتا دیے۔

حکیم سعید قتل کیس: ایم کیو ایم کے کارکن باعزت بری

ملزم نے انکشاف کیا کہ سابق گورنر سندھ حکیم محمد سعید کے قتل میں ایم کیو ایم کے 2 کارکن ذوالفقار حیدر اور محمود صدیقی ملوث ہیں۔ منہاج قاضی نے محمود صدیقی اور صفدر باقر کے را سے تعلقات کی تصدیق بھی کردی ہے۔

ایم کیو ایم کے ارکان ذوالفقار حیدر  شاہ فیصل ٹاؤن سے رکن صوبائی اسمبلی رہ چکے ہیں جبکہ محمود صدیقی اے پی ایم ایس او کے سابق چیئرمین ہیں۔

معاشرے کا اعلیٰ اذہان بارود کے دہانے پر

واضح رہے کہ حکیم سعید قتل کیس میں 5 ملزمان کو نامزد کیا گیا تھا جس میں مرکزی ملزم عامر اللہ سمیت ندیم موٹا، سیکٹر انچارج شاکر اللہ، عمران پاشا اور فصیح جگنو شامل ہیں۔

شاکر لنگڑا اور عامر کو 1999 میں انسداد دہشت گردی کی عدالت سے پھانسی کی سزا سنائی گئی تاہم دونوں ملزمان کو گزشتہ برس سپریم کورٹ کی جانب سے بری کردیا گیا۔ ملزم عامر کی بہن رکن قومی اسمبلی بھی منتخب ہوچکی ہیں۔ فصیح جگنو پولیس حراست میں ہلاک ہوچکا ہے۔

ہمدرد فاؤنڈیشن اور ہمدرد یونیورسٹی کے بانی حکیم محمد سعید کو 17 اکتوبر 1998 کو ان کے مطب کے باہر فائرنگ کر کے قتل کردیا گیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top