The news is by your side.

Advertisement

ڈینگی وائرس: ملک بھر میں مزید سیکڑوں کیسز رپورٹ، ایک نوجوان دم توڑ گیا

جڑواں شہر سے ڈینگی کے خاتمے کے لہے بڑا منصوبہ تیار، 19.64 ملین روپے مقرر

راولپنڈی: ملک بھر میں ڈینگی وائرس کے وار جاری ہیں، مزید سیکڑوں کیسز رپورٹ ہوئے، ہولی فیملی اسپتال میں ڈینگی سے متاثرہ نوجوان دم توڑ گیا، جس کے بعد پنجاب میں ہونے والی اموات کی تعداد 11 ہو گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ڈینگی کے 230 کیس رپورٹ ہوئے جب کہ 119 مریض ڈسچارج کیے گئے، محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ پنجاب کے تمام اسپتالوں میں ڈینگی کے کل 391 کنفرم مریض زیر علاج ہیں۔

محکمے کے مطابق راولپنڈی میں ڈینگی کے سب سے زیادہ 188 کیس سامنے آئے، ڈینگی ایکسپرٹ ایڈوائزی گروپ کے مطابق رواں سال پنجاب میں ڈینگی سے 10 اموات ہوئیں۔

ادھر ڈینگی رسپانس یونٹ کے پی کے مطابق صوبے میں 46 نئے کیسز رپورٹ ہوئے جس کے بعد ڈینگی کیسز کی تعداد 5835 ہو گئی، صرف پشاور شہر میں ڈینگی کے 2329 نئے کیسز رپورٹ ہوئے، جب کہ اسپتالوں میں اس وقت ڈینگی کے 168 مریض زیر علاج ہیں۔

سوات، مینگورہ میں مزید 10 افراد میں ڈینگی کی تصدیق ہو گئی ہے، جس کے بعد ضلع سوات میں ڈینگی سے متاثرہ افراد کی تعداد 475 ہو گئی۔

رواں ماہ سندھ میں ڈینگی سے متاثرہ افراد کی تعداد 3 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے، سندھ میں سال 2017 اور 2018 کا ریکارڈ ایک ماہ میں ٹوٹ گیا، رواں ماہ سندھ میں سب سے زیادہ ڈینگی کیس کراچی سے سامنے آئے، رواں ماہ سندھ میں 3114 افراد ڈینگی سے متاثر ہوئے، ڈینگی سرویلنس سیل کے مطابق رواں سال ڈینگی سے اموات کی تعداد 20 ہو چکی ہے۔

ڈینگی سرویلنس سیل کے مطابق اکتوبر میں کراچی کے 2889 افراد ڈینگی کا شکار ہوئے، رواں سال سندھ میں ڈینگی سے متاثرہ افراد کی تعداد 6331 ہے، متاثرین میں سے 5931 افراد کا تعلق کراچی سے ہے۔

ترجمان وزارت قومی صحت کا کہنا ہے کہ جڑواں شہر سے ڈینگی کے خاتمے کے لیے بڑا منصوبہ تیار کر لیا گیا ہے، انسداد ڈینگی منصوبے کا آغاز جڑواں شہروں کے حساس علاقوں سے ہوگا، منصوبے سے 2 لاکھ سے زائد افراد مستفید ہوں گے، منصوبے کے لیے 19.64 ملین روپے مقرر کیے گئے ہیں۔

ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا جڑواں شہروں میں ڈینگی کے حساس علاقوں میں رضا کاروں کی ٹریننگ ہوگی، ڈینگی لاروا تلف کرنے کے لیے گھر گھرعوام کو آگاہی دی جائے گی، تعلیمی اداروں میں ڈینگی سے متعلق آگاہی مواد فراہم کیا جائے گا، جب کہ لاروے کے ذرایع پر قابو کے لیے 3 ہزار مریضوں کو بھی آگاہی مواد دیا جائے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں