The news is by your side.

Advertisement

قاتل کا انوکھا اعتراف جرم : پولیس بھی حیران رہ گئی

ماسکو : روس میں ایک شخص نے جھگڑے کے بعد تین افراد کو گولیاں ماردیں وہ چاہتا تو موقع واردارت سے فرار بھی ہوسکتا تھالیکن اس نے پولیس کو ایک نئے انداز سے آگاہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق روس کے مشرقی علاقے کے جنگل میں ایک شخص نے شراب پی کر جھگڑے کے دوران تین افراد کو قتل کردیا اور جرم کا اعتراف کرنے کے لیے انوکھا طریقہ اپنایا۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے کے مطابق روس میں سنگین جرائم کی تحقیق کرنے والی کمیٹی نے گزشتہ روز بتایا کہ اس شخص اور اس کے ایک جاننے والے نے چین کی سرحد کے قریب واقع علاقے خبرواسک میں ایک فارم میں شراب پینے کے دوران جھگڑا شروع کر دیا تھا۔

کمیٹی کے بیان میں مزید تفصیلات بتائے بغیر کہا گیا ہے کہ اس شخص نے اس کے بعد اپنے جاننے والے ایک آدمی اور دو خواتین کو گولی مار دی تھی۔

فارم کے دور دراز مقام پر واقع ہونے اور وہاں تک ٹرانسپورٹ کی سہولیات کی کمی کی وجہ سے اس شخص کو اوخوتسک گاؤں  پہنچنے میں ایک ہفتہ لگا جہاں اس نے خود کو پولیس کے حوالے کیا اور بتایا کہ اس نے یہ جرائم کیے ہیں۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ یہ شخص جس کی شناخت ابھی نہیں ہوئی، اسے حراست میں لے لیا گیا ہے اور تفتیش کار اس فارم کی جانب روانہ ہو گئے ہیں جو ایکی گھنے جنگل میں گھرا ہوا ہے۔

خیال رہے کہ روس میں الکوحل مشروبات کے خلاف مہمات اور حکام کی جانب سے فروخت پر قابو پانے کے لیے جارحانہ اقدامات کے بعد چند برسوں سے شراب نوشی کم ہو رہی ہے لیکن اس پیش رفت کے باوجود شراب پینے کے دوران اس طرح کے واقعات عام ہیں۔

واضح رہے کہ چار برس قبل 2017 میں ماسکو کے شمال مغربی گاؤں میں ایک شخص نے شراب نوشی کے جھگڑے کے دوران نو افراد کو قتل کردیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں