The news is by your side.

Advertisement

قراقرم ماؤنٹین رینج میں نایاب جانور اور 3 بلند ترین جھیلوں کی دریافت کا دعویٰ

گلگت: پاکستان 5 ہزار میٹر سے زاید بلند ترین جھیلوں والے ممالک کی فہرست میں شامل ہو گیا ہے، کوہ پیما عمر احسن نے قراقرم ماؤنٹین رینج میں تین جھیلوں کی دریافت کا دعویٰ کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق کوہِ پیما عمر احسن نے شمشال میں ملکی بلند ترین جھیل دریافت کرنے کا دعویٰ کیا ہے، عمر احسن نے قراقرم ماؤنٹین رینج میں نئی چوٹی، نایاب جانور اور 3 بلند ترین جھیل موجود ہونے کا بھی دعویٰ کیا۔

عمر احسن کا تعلق کراچی سے ہے، قومی ہیرو ایم ایم عالم کے بھانجے ہیں، عمر احسن نے کہا ہے کہ وہ جلد ویڈیوز اور تصاویر پر مشتمل ثبوت عالمی اداروں کو فراہم کر دیں گے۔

کوہِ پیما کا کہنا ہے کہ شمشال کی جھیل سطح سمندر سے 17077 فٹ کی بلندی پر ہے، اس جھیل کا نام قومی ہیرو ایم ایم عالم کے نام سے منسوب کر دیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ دوسری جھیل 16398 فٹ بلندی پر ہے جس کا نام لالک جان شہید رکھا ہے، جب کہ تیسری جھیل 15990 فٹ بلندی پر ہے اور اس کا نام عمر احسن جھیل رکھ دیا ہے۔

کوہِ پیما نے مزید کہا کہ نایاب جنگلی حیات ویزل بھی اسی علاقے میں دریافت کی ہے، ویزل امریکا میں پائی جاتی ہے۔

عمر احسن نے بتایا کہ غزریب ماؤنٹین رینج میں نیا بلند پہاڑ بھی دریافت کیا ہے جس کا نام ویزل پیک رکھا۔ خیال رہے کہ کوہ پیما نے پہلی بار 5100 میٹر بلندی پر بغیر آکسیجن کے رات گزاری۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں