تازہ ترین

’پاکستان کیلیے آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک سے اچھی خبریں آئیں گی‘

امریکا میں پاکستان کے سفیر مسعود خان نے کہا...

پاکستان کے بیلسٹک میزائل پروگرام کے حوالے سے ترجمان دفتر خارجہ کا اہم بیان

اسلام آباد : پاکستان کے بیلسٹک میزائل پروگرام کے...

ملازمین کے لئے خوشخبری: حکومت نے بڑی مشکل آسان کردی

اسلام آباد: حکومت نے اہم تعیناتیوں کی پالیسی میں...

ضمنی انتخابات میں فوج اور سول آرمڈ فورسز تعینات کرنے کی منظوری

اسلام آباد : ضمنی انتخابات میں فوج اور سول...

طویل مدتی قرض پروگرام : آئی ایم ایف نے پاکستان کی درخواست منظور کرلی

اسلام آباد: عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے...

وزیر داخلہ سندھ کا اسٹریٹ کرائم سے متعلق بیان مضحکہ خیز ہے ، علی خورشیدی

کراچی : سندھ اسمبلی میں ایم کیوایم کے نامزد اپوزیشن لیڈرعلی خورشیدی کا کہنا ہے کہ وزیرداخلہ سندھ کا اسٹریٹ کرائم سے متعلق بیان مضحکہ خیز ہے، زخموں پر نمک پاشی نہ کریں۔

تفصیلات کے مطابق سندھ اسمبلی میں ایم کیوایم کے نامزد اپوزیشن لیڈرعلی خورشیدی نے اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امن و امان اورکراچی میں اسٹریٹ کرائم کی صورتحال تشویشناک ہے ، 2023-24 کے بجٹ میں ہمیشہ کی طرح امن وامان کےبجٹ میں اضافہ ہوا، سال 2022،2023 اور اب 3 ماہ میں پہلےسےزیادہ وارداتیں ہوئیں۔

علی خورشیدی کا کہنا تھا کہ صوبائی حکومت جرائم کنٹرول کرنے میں ناکام ہوچکی ہے، ڈکیتی میں جان جانےپراہلخانہ کی فوری امدادکیلئےقانون سازی چاہتےہیں، قانون سازی کیلئے ایم کیو ایم بلینک چیک دینے کو تیار ہے۔

ایم کیوایم کے نامزد اپوزیشن لیڈر نے وزیر داخلہ ضیالنجار کا اسٹریٹ کرائم سے متعلق بیان مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا منصب پر بٹھ کر ایسی باتیں کرنے سے پہلے سوچنا چاہیے، زخموں پر مرہم رکھنے کے بجائے نمک پاشی کررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ سب جانتے ہیں ایس ایچ او رشوت دے کر لگتے ہیں ، رشوت دے کرایس ایچ او لگائیں گے تو انہوں نےعوام کیلئےکام تونہیں کرنا، حکومت 15سالہ سے سیوریج اور ٹرانسپورٹ ودیگرمسائل حل کرنےمیں ناکام رہی۔

علی خورشیدی نے مزید کہا کہ وزیراعظم کی بھی ذمہ داری ہے بھی کراچی پر نظر کرم کریں ، وزیراعظم کراچی پر احسان نہیں بلکہ اسکا جائز حق دیں ،رہنماایم کیوایم علی خورشیدی

نامزد اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ اچھے ورکنگ ریلیشن کے ساتھ پی پی کے ساتھ چلنے کو تیار ہیں ، پی پی نے اچھے کام کیے تو ساتھ اور اگر عوامی مفادکیخلاف کام کیاتودیواربنیں گے۔

Comments

- Advertisement -