site
stats
عالمی خبریں

مسلمان باپ نے بیٹے کے امریکی قاتل کو معاف کردیا

مسلمان پیزا ڈیلیوری بوائے کے معمر والد نے بیٹے کے امریکی قاتل کو معاف کرتے ہوئے گلے سے لگا لیا‘ ملزم اپنےکیے پر شرمندگی کا اظہار کرتے ہوئے رو رو کر معافی مانگی۔

تفصیلات کے مطابق امریکا میں مقیم ایک مسلمان شخص عبدالمنیم جتمعود نے بیٹے کے قاتل معاف کرتے ہوئے اس کے قاتل الیگزینڈر ریلفورڈ سے کہا کہ ’میں نے تمہیں اسلام کی اصل روح کے لئے معاف کیا ہے‘۔

عبدالمنیم کا کہنا تھا کہ ’اسلام میں خدا جب تک کسی انسان کو معاف نہیں کرتا جب تک کہ اس کا بندہ اس گناہ کو معاف نہ کرے، خدا کے ہاں ہمیشہ معافی کا در کھلا رہتا ہے تو بس انسان اس در تک پہنچے اور ایک نئی زندگی کا آغاز کرے‘۔ تاہم معافی ملتے ہی امریکی شہری الیگزینڈر ریلفورڈ زار و قطار رونے لگا۔

واضح رہے کہ امریکی ریاست کنٹکی میں واقع ایک پیزا شاپ میں کام کرنے والے صلاح الدین جتمعود کو اپریل 2015 میں اس وقت قتل کیا گیا جب وہ رات دیر تک اپنی آخری ڈیلیوری دینے گیا اور اسے ایک بلڈنگ کے قریب ڈکیتی کی غرض سے روکا گیا، بعدازاں چھریوں کے وار کر کے قتل کیا گیا تھا۔

عدالت کی جانب سے تحقیقات کیلئے تین رکنی کمیٹی قائم کی تھی جس نے تینوں ملزمان میں سے الیگزینڈر ریلفورڈ کو مجرم ٹھہرایا تھا، تاہم الیگزینڈر ریلفورڈ کا کہنا تھا کہ وہ صرف ڈکیتی کے جرم کا مرتکب ہوا ہے نہ کہ اس نے صلاح الدین کو قتل کیا ہے۔

جس کے بعد عدالت نے الیگزینڈر ریلفورڈ کو ڈکیتی، قتل اور ثبوتوں کے ہیر پھیر کے جرائم کے بدلے میں 31 سال قید کی سزا سنائی تھی۔

صلاح الدین کے والد عبدالمنیم نے الیگزینڈر ریلفورڈ کو بتایا کہ انہوں نے اسے اپنی اور صلاح الدین کی والدہ کی جانب سے معاف کیا ہے جن کا دو سال قبل انتقال ہوچکا ہے۔

الیگزینڈر ریلفورڈ نے مقتول کے والد سے معافی مانگتے ہوئے کہا کہ میں آپ کا نقصان تو پورا نہیں کرسکتا لیکن اپنے کئے پر آپ اور آپ کے خاندان سے دل سے معافی مانگتا ہوں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئرکریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top