قومی اسمبلی کی کارروائی ہنگامہ آرائی کی نذر، اجلاس ملتوی -
The news is by your side.

Advertisement

قومی اسمبلی کی کارروائی ہنگامہ آرائی کی نذر، اجلاس ملتوی

اسلام آباد: قومی اسمبلی کا اجلاس شدید ہنگامہ آرائی کی نذر ہو گیا، اجلاس میں پی پی اور پی ٹی آئی اراکین کے مابین تلخ جملوں کے تبادلے کے بعد اجلاس ملتوی کر دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کے اجلاس میں ہنگامہ آرائی اور تلخ جملوں کے تبادلے کے بعد اسپیکر قومی اسمبلی نے اجلاس ملتوی کر دیا۔

پی پی رکن رفیع اللہ اشتعال میں آ کر پی ٹی آئی رکن کو مارنے دوڑ پڑے

پیپلز پارٹی کی رکن اسمبلی شازیہ مری کی تقریر کے دوران حکومتی رکن عبد المجید نیازی غصے میں آ گئے تو انھوں نے جوابی تقریر کر ڈالی۔

عبد المجید نیازی کے جملوں پر انھیں پی پی رکن رفیع اللہ اشتعال میں آ کر مارنے کے لیے دوڑ پڑے، پی پی رکن اور پی ٹی آئی کے محمد خان لغاری نے ایک دوسرے سے شدید تلخ کلامی بھی کی۔

محمد خان لغاری اور پی پی کے رفیع اللہ میں جھڑپ پر اسپیکر کی وارننگ کے باوجود بپھرے ارکان باز نہ آئے، حکومتی اور اپوزیشن ارکان نے بھی بیچ بچاؤ کرانے کی کوشش کی۔


یہ بھی پڑھیں:  قومی اسمبلی اجلاس میں گرما گرمی، وزیرِ خزانہ کے بیان پر اپوزیشن کا واک آؤٹ


اس موقع پر اسپیکر اسد قیصر نے کہا کہ ہنگامہ آرائی پر عبد المجید نیازی اور رفیع اللہ دونوں کو باہر نکال دیا جائے گا، جھگڑا جاری رہنے پر انھوں نے سارجنٹ ایٹ آرمز کو حکم دیا کہ رفیع اللہ کو اسمبلی ہال سے باہر نکال دیا جائے۔

تاہم اپوزیشن ارکان اسپیکر کے ڈائس کے سامنے جمع ہو گئے، دوسری طرف صورتِ حال کشیدہ ہونے پر سارجنٹ ایٹ آرمز بھی ایوان میں آ گئے، بعد ازاں بیچ بچاؤ پر اسپیکر قومی اسمبلی نے اجلاس ملتوی کر دیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں