The news is by your side.

Advertisement

الیکشن میں مبینہ دھاندلی: کمیٹی بنانے کی تحریک قومی اسمبلی میں پیش

اسلام آباد: اپوزیشن کی تسلی کے لیے حکومت کی جانب سے عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنانے کی تحریک قومی اسمبلی میں پیش کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کے لیے پارلیمانی کمیٹی بنانے کی تحریک قومی اسمبلی میں پیش کی گئی۔ پارلیمانی کمیشن بنانے کی تحریک وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے پیش کی گئی۔

اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ ہم شفافیت کے قائل ہیں، انتخابات کی شفافیت کے لیے سب کچھ عوام کے سامنے رکھنے کو تیار ہیں۔

مسلم لیگ ن کے احسن اقبال نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پارلیمانی کمیٹی سے متعلق ٹی او آرز پہلے سے طے کرنا چاہئیں، کوئی بھی جماعت ٹی او آرز پیش کر سکتی ہے انہیں منظور کرنا چاہیئے۔

پیپلز پارٹی کی رہنما شازیہ مری نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی جانب سے بھی ٹی او آرز پیش کی جائیں گی۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ کمیٹی کا چیئرمین اپوزیشن کے کسی رہنما کو بنایا جائے۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیر اعظم کو پہلے اپنا مؤقف پیش کرنے دیں، وزیر اعظم کے مؤقف کے بعد آپ اپنا مؤقف دینے کاحق رکھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ آپ کے مؤقف کو سر خم تسلیم کیا، پارلیمانی کمیشن کے لیے تیار ہیں، ایوان کی رائے سے جو کمیٹی تشکیل دی جائے گی وہ اختیار رکھے گی۔ گزشتہ دور حکومت میں بھی عوام کی متفقہ رائے پر ایک کمیٹی بنائی گئی تھی۔ کمیٹی کی صدارت حکومت کے نامزد کردہ اسحٰق ڈار کرتے تھے۔

انہوں نے کہا کہ کمیٹیوں میں برابری کی بنیاد پر نمائندگی دی جاتی ہے، ہم بھی چاہتے ہیں اپوزیشن کی انتخابات سے متعلق تسلی ہو۔

وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا کہ وزیر اعظم کی ہدایت پر کمیٹی بنائی جا رہی ہے، اپوزیشن کو یاد دلانا چاہتا ہوں کہ کمیٹی کے لیے تحریک انصاف نے 4 سال احتجاج کیا۔ وزیر اعظم کا بڑا پن ہے کہ پہلے دن ہی کہا کمیٹی بنالیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان 4 سال کہتے رہے 4 حلقے کھول لیں، 4 حلقے کھولنے کے لیے 4 سال لگے پھر جب حلقے کھلے تو سب نے دیکھ لیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں