The news is by your side.

نیب قانون میں ترمیم کے بعد کونسا کیس چلے گا اور کون سا بند ہوگا؟

اسلام آباد : نیب نے قانون میں ترمیم کے بعد تمام بیوروز سےسفارشات طلب کرلیں کہ کون کا کیس چلائیں اور کونسا بند کریں؟

تفصیلات کے مطابق نیب قانون میں ترمیم کے بعد بڑی پیشرفت سامنے‌ آئی، نیب نے تمام بیوروز چلانے والے کیس چلانے اور بند کرنے والے کیسز کے حوالے سے سفارشات طلب کرلیں۔

اس حوالے سے نیب ہیڈکوارٹرز نے تمام ریجنل بیوروز کو مراسلہ بھیج دیا ، جس میں کہا ہے کہ تمام زیر التوا انکوائریوں، تحقیقات اور مقدمات کا جائزہ لیا جائے۔

مراسلے میں کہا گیا کہ 26اگست تک کیسز پر نظر ثانی کر کے سفارشات بھیجیں۔

مزید پڑھیں : نیب ترامیم: سابق چیئرمین کے دور میں قائم کئی کیسز مکمل یا جُزوی ختم ہونے کا امکان

خیال رہے قومی احتساب بیورو کے قانون میں نئی ترامیم کے بعد امکان ہے کہ سابق چیئرمین نیب کے دور میں قائم کئی کیسز مکمل یا جُزوی طور پر ختم ہو جائیں گے۔

نئی ترامیم سے جعلی اکاؤنٹس کے 14 ریفرنسز، 13 انکوائریوں، اور 18 انویسٹیگیشن پر اثر پڑے گا۔

ذرائع کا کہنا تھا کہ نئے قانون کے مطابق جس علاقے کا جرم ہوگا کیس بھی وہیں چل سکے گا، یعنی سندھ میں لگے الزامات کا نیب راولپنڈی میں ٹرائل جاری رہنا ممکن نہیں ہوگا۔

ذرائع کے مطابق سابق چیئرمین کے دور میں قائم کمزور کیسز واپس بھی لیے جا سکیں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں