The news is by your side.

Advertisement

جعلی اکاؤنٹس کیس: آصف علی زرداری کا 14 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

اسلام آباد: احتساب عدالت نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں گرفتار سابق صدر آصف زرداری کا 14 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے 29 جولائی تک توسیع کردی۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کی احتساب عدالت میں سابق آصف علی زرداری کے خلاف جعلی اکاؤنٹس کیس کی سماعت ہوئی، آصف علی زرداری کو 13 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر احتساب عدالت میں پیش کیا گیا۔

عدالت میں سماعت کے دوران وکیل صفائی نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ بچے کل نیب حوالات میں والد سے اکیلے ملنا چاہتے ہیں، ہفتے میں 2 بار ملنے کی اجازت بھی دی جائے۔

آصفہ بھٹو نے عدالت سے استدعا کی کہ والد سے ملاقات کرنے کی اجازت دی جائے جس پر معزز جج نے ان کی درخواست منظور کرلی، وکیل صفائی نے کہا کہ آج بھی مل لیں گی کل بھی ملاقات کی اجازت چاہیے۔

احتساب عدالت کے جج نے استفسار کیا کہ تفتیشی افسر کہاں ہے، وکیل نیب نے کہا کہ راستے میں ہیں تھوڑی دیر تک پہنچ جائیں گے۔

بعدازاں احتساب عدالت نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں گرفتار سابق صدر آصف زرداری کا 14 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کرتے ہوئے 29 جولائی تک توسیع کردی۔

آصف علی زرداری کی پیشی کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے، جوڈیشل کمپلیکس کے اطراف میں پولیس کی بھاری نفری تعینات تھی۔

نیب وکیل نے گزشتہ سماعت کے دوران عدالت کو بتایا تھا کہ پارک لین کیس میں بھی اہم پیش رفت ہوئی ہے، 27 اپریل 2019 کو چیئرمین نیب نے وارنٹ جاری کیے تھے۔

تفتیشی افسر کا کہنا تھا آصف زرداری نے پروڈکشن آرڈر پر اسمبلی اجلاس میں شرکت کی، آصف زرداری سے تفتیش مکمل نہیں ہو سکی، صرف کل ہی ان سے تفتیش ہوسکی، جس پر جج نے کہا تھا ایک کے بعد دوسرے پھر تیسرے کیس میں گرفتار کیا جائےگا، بہتر نہیں کہ تمام مقدمات کے تفتیشی افسران کو تفتیش کی اجازت دے دیں؟ ایسا کرنے سے بار بارگرفتاری اور ریمانڈ کی ضرورت نہیں پڑے گی۔

عدالت نے آصف زرداری کے پارک لین کیس میں جسمانی ریمانڈ کی درخواست پر فیصلہ محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے آصف زرداری کا 13روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کیا تھا

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں