The news is by your side.

Advertisement

یوکرینی دارالحکومت کے گرد گھیرا تنگ

روس نے یوکرین کے دارالحکومت کے گرد گھیرا تنگ کردیا ہے اور غیرملکی میڈیا کے مطابق سب سے بڑا فوجی قافلہ کیف کے قریب پہنچ چکا ہے۔

اطلاعات ہیں کہ روس کا سب سے بڑا فوجی قافلہ جمعے کی علی الصباح یوکرین کے دارالحکومت کے قریب پہنچ گیا ہے۔

امریکی سیٹلائٹ سے لی گئی تصاویر کے مطابق روس کے اس بڑے فوجی قافلے نے کیف کے مغرب میں انتونوف ہوائی اڈے کے نزدیک اپنی صفوں کو اکٹھا کرنا شروع کردیا ہے۔ ان تصاویر سے ظاہر ہورہا ہے کہ روسی قافلے کے فوجیوں کو ازسرنو تعینات کیا جارہا ہے۔

تاہم مغربی میڈیا روسی فوجی قافلے کی کیف سے دوری کی مسافت کے حوالے سے مختلف خبریں دے رہا ہے جن کے مطابق روسی قافلہ یوکرین کے دارالحکومت سے 5 سے 40 کلومیٹر کی دوری پر ہے۔

روسی فوج کی پیشقدمی کے حوالے سے ایک امریکی ذمے دار نے مقامی نیوز چینل کو بتایا ہے کہ امریکی انٹیلیجنس کے اندازے کے مطابق آئندہ ایک سے دو ہفتوں میں روس کو کیف پر مکمل کنٹرول حاصل ہوسکتا ہے۔ عہدیدار کے مطابق روس کو عسکری طور پر کافی بڑی برتری حاصل ہے تاہم اس کے آپریشن میں اس موثر رابطہ کاری کا فقدان نظر آرہا ہے جو کسی بڑی فوج کا خاصہ ہوتا ہے۔

دوسری جانب امریکی وزارت خارجہ نے باور کرایا ہے کہ یوکرین پر جلد قبضے کے حوالے سے روسی صدر ولادیمیر پیوٹن کے منصوبے ناکام ہوچکے ہیں۔

امریکی مرکزی انٹیلجنس ایجنسی سی آئی اے کے سربراہ ولیم بیرنر نے کہا ہے کہ اگرچہ روسی صدر پیوٹن نے اپنے ملک کے اندر ذرائع ابلاغ پر کنٹرول سخت کردیا ہے تاہم وہ یوکرین میں ہونے والے واقعات کی حقیقت ہمیشہ کیلیے نہیں چھپاسکتے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایسے بہت سے روسی ہیں جن کے پاس موجود انٹرنیٹ کنکشنز پر نگرانی نہیں ہے اور وہ یوٹیوب تک رسائی حاصل کرکے وہاں سے معلومات حاصل کرسکتے ہیں جبککہ روسی عوام زخمی اور ہلاک فوجیوں کی وطن واپسی پر حقیقت خود جان لیں گے۔

مزید پڑھیں: پانچواں روز: روس کے یوکرین پر حملے جاری، کیف پر قبضے کا دعویٰ

واضح رہے کہ روس نے یوکرین پر حملے کے پانچویں روز ہی کیف پر قبضے کا دعویٰ کردیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں