The news is by your side.

Advertisement

نیٹو ممالک کا ہنگامی اجلاس طلب، برطانوی وزیر اعظم کی مقتول کمانڈر پر الزامات کی بارش

جنرل سلیمانی خطے کو غیر مستحکم کرنے کا ذمہ دار تھا، ان کے قتل پر افسوس نہیں کریں گے: بورس جانسن

برسلز: نیٹو ممالک کے سفیروں کا ہنگامی اجلاس کل برسلز میں طلب کر لیا گیا ہے جس میں ایرانی کمانڈر قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے بعد کی صورت حال پر غور کیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق نیٹو حکام کا کہنا ہے کہ نیٹو ممالک کے سفیروں کا ہنگامی اجلاس منگل کو برسلز میں طلب کیا گیا ہے، جس میں ایرانی کمانڈر کی ہلاکت سے خطے میں پیدا صورت حال پر غور ہوگا۔

دوسری طرف برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن نے ایرانی کمانڈر قاسم سلیمانی پر الزامات کی بارش کر دی ہے، بورس جانسن نے کہا کہ جنرل سلیمانی خطے کو غیر مستحکم کرنے کا ذمہ دار تھا، ان کے قتل پر افسوس نہیں کریں گے۔

تازہ ترین:  جوہری معاہدہ منسوخ، ایران نے بڑا اعلان کر دیا

برطانوی وزیر اعظم نے کہا کہ جنرل سلیمانی سے ہمارے تمام مفادات کو خطرہ لا حق تھا، ایرانی کمانڈر کا شہریوں اور مغربی اہل کاروں کی موت میں مرکزی کردار تھا، ایران کی جانب سے جوابی کارروائی کے اعلانات خطے میں مزید تشدد کا باعث بنیں گے۔

خیال رہے کہ جنرل قاسم سلیمانی پر حملے کے لیے قطر میں امریکی بیس بھی استعمال ہوئی تھی، غیر ملکی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ ڈرون العدید بیس سے بھیجا گیا تھا۔ گزشتہ روز برطانیہ نے دو جنگی بحری بیڑے خلیج فارس میں روانہ کر دیے ہیں، بحری بیڑے آبنائے ہرمز سے آئل ٹینکر اور برطانوی شہریوں کو نکالیں گے۔ خطے میں کشیدگی بڑھنے کے بعد امریکی اتحادی افواج نے عراق میں داعش کے خلاف کارروائیاں بھی بند کرنے کا اعلان کیا، نیٹو کا کہنا تھا کہ داعش کی شکست کے لیے ساتھی ممالک کے اہل کاروں کی حفاظت پہلی ترجیح ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں