The news is by your side.

Advertisement

ستاروں کے ہزاروں سال قدیم نقشے سے متعلق اہم فیصلہ

لندن: ستاروں کے ہزاروں سال قدیم نقشے نیبرا اسکائی ڈسک کی برٹش میوزیم میں نمائش کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق دنیا بھر میں ستاروں کا قدیم ترین سمجھا جانے والا نقشہ نیبرا اسکائی ڈسک برٹش میوزیم میں نمائش کے لیے رکھی جائے گی۔

عام خیال کے مطابق نیبرا اسکائی ڈسک 3 ہزار 6 سو سال پرانا ایک ستاروں کا چارٹ ہے، جو کانسی کے زمانے (برونز ایج) میں بنایا گیا تھا، اور کانسی کی یہ ڈسک جرمنی میں 1999 میں دریافت کی گئی تھی، اسے 20 ویں صدی کی سب سے اہم آثار قدیمہ میں سے ایک سمجھا جاتا ہے۔

نیبرا ڈسک کی لمبائی تقریباً 30 سینٹی میٹر اور وزن 2.2 کلو گرام ہے، اور یہ نیلے سبز رنگ کا تھال ہے، جس میں سورج، چاند، ستارے، سولسٹیس اور دیگر کائناتی مظاہر کی نمائندگی کرنے والے سونے کی علامتیں موجود ہیں۔

اگرچہ یہ جرمنی کے ہالے کے اسٹیٹ میوزیم آف پری ہسٹری کی ملکیت ہے، لیکن برٹش میوزیم کو نمائش کے لیے ادھار کے طور پر دی جا رہی ہے، 15 برسوں میں یہ پہلی بار ہے کہ یہ ڈسک بیرون ملک کسی میوزیم کو دی گئی ہے۔

تین ہزار چھ سو سال پرانی اس اسکائی ڈسک پر 32 ستارے اور چاند کے ساتھ ساتھ سورج کی بھی شبیہ موجود ہے۔

یونیسکو کی اہم تاریخی دستاویزات کی عالمی فہرست میں اسے نوادرات کے طور پر شامل کیا گیا ہے، یونیسکو کے مطابق یہ ڈسک انسانیت کے آسمان کے ابتدائی علم کی ایک منفرد جھلک پیش کرتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں