روسی طیارے کی تباہی، پیوٹن کا اسرائیلی وزیراعظم سے ٹیلی فونک رابطہ
The news is by your side.

Advertisement

روسی طیارے کی تباہی، پیوٹن کا اسرائیلی وزیراعظم سے ٹیلی فونک رابطہ

ماسکو: شام میں روسی جنگی طیارے کی تباہی سے متعلق اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو اور روسی صدر ولادی میر پیوٹن کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ ہوا۔

تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز شام میں روسی جنگی طیارے کو مار گرایا گیا تھا جس کے باعث طیارے میں سوار 14 افراد ہلاک ہوگئے تھے، روسی حکام نے اسرائیل پر حملے کا الزام عائد کیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ولادی میر پیوٹن اور نیتن یاہو کے درمیان ہونے والی ٹیلی فونک گفتگو کے دوران اسرائیلی وزیر اعظم نے حملے کا الزام شام پر عائد کیا ہے۔

نیتن یاہو نے اس بات کی بھی یقین دہانی کرائی ہے کہ معاملے کی شفاف تحقیقات کے لیے اسرائیل روس کے ساتھ بھرپور تعاون بھی کرے گا۔

البتہ انہوں نے واضح کیا کہ ان کی حکومت شام میں ایرانی عسکری عناصر کے خلاف کارروائی جاری رکھے گی، جبکہ روسی طیارے کی تباہی پر تحقیقات ہوگی۔

روسی طیارہ مار گرانے پر ماسکو میں اسرائیلی سفیر کی طلبی

واضح رہے کہ طیارہ گزشتہ روز شام میں مشن سے واپس لوٹتے ہوئے لاپتہ ہوا تھا، روسی جنگی طیارے میں 14 افراد سوار تھے۔

یاد رہے رواں سال مارچ میں بھی شامی شہر لتاکیا میں روس کا ایک فوجی طیارہ حميميم کے فوجی اڈے پر گر کر تباہ ہو گیا تھا، جہاں سے روس شام میں ہونے والی تمام فوجی کاررائیاں کرتا ہے۔

فرروی 2018 میں باغیوں نے ادلب صوبے میں روس کا سخوئی 25 طیارہ مار گرانے کا دعوی کیا تھا، جنگی طیارہ تباہ ہونے سے پہلے پائلٹ طیارے سے نکلنے میں کامیاب ہوگیا تھا تاہم پائلٹ جب زمین پرپہنچا تو اس کی باغیوں سے جھڑپ ہوئی اور وہ فائرنگ کے تبادلے میں مارا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں