The news is by your side.

Advertisement

کینسراور مرگی سے بچاؤ کی ادویات بنانے کا جین دریافت

چنیوٹ : کینسر اور مرگی سے بچاؤ کی ادویات بنانے کا جین دریافت کرلیا گیا، پاکستانی نوجوان ڈاکٹر تجمل حسین نے ادویات بنانے کا جین دریافت کیا، ڈاکٹر تجمل نے اپنی ریسرچ کو کینسرسے وفات پانیوالی مرحومہ والدہ کے نام سے منسوب کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستانی نوجوان ڈاکٹر تجمل حسین نے جرمنی کی ڈارٹمنڈ یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کرلی، جن کا ریسرچ آرٹیکل سوئٹرز لینڈ کے انٹرنیشنل جرنل میں شائع ہوا۔

ڈاکٹر تجمل حسین نے اپنی تحقیقات کے بعد ایسے جین کی دریافت کا دعوی کیا ہے کہ جو کینسر اور مرگی جیسی موذی امراض کی ادویات بنانے میں استعمال کیا جاسکتا ہے۔

چنیوٹ سے تعلق رکھنے والے30سالہ نوجوان ڈاکٹر تجمل حسین کا کہنا ہے کہ یہ جین جو کہ راڈولا مارگیناٹا نامی پودے میں ایک اہم کمپاونڈ کو بنانے میں مدد کرتا ہے، اور اس کمپاونڈ کی خاص بات ہے کہ اس سے کینسر اور مرگی جیسی بیماریوں کیخلاف ادویات بنانے میں مدد ملے گی۔

ڈاکٹر تجمل حسین کا کہنا تھا کہ راڈولا مارگیناٹا نامی پودا نیوزی لینڈ میں پایا جاتاہے اور ہماری ریسرچ میں نیوزی لینڈ حکومت نے جرمنی کیساتھ بھرپور تعاون کیا تاہم ابھی اس شعبہ میں مزید تحقیق کی ضرورت ہے اور وہ پرامید ہیں کہ اس پر وہ مزید ریسرچ کے بعد مثبت نتائج حاصل کرسکتے ہیں۔

حال ہی میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کنابس (بھنگ) کے استعمال کے لئے نیا قانون متعارف کروایا ہے، جس کے بعد کنابس کے فارما سوٹیکل کمپنیوں میں استعمال کے وسیع مواقع ہیں۔

دلچسپ امر یہ کے کنابس کے بعد اب تک دنیا میں ہونیوالی ریسرچ میں صرف یہ پودا جس پر ڈاکٹر تجمل حسین نے کام کیا ہے کہ وہ بھی ایسا ہی کمپاونڈ پیدا کرتا ہے اور اب جب ڈاکٹر تجمل حسین نے یہ جین دریافت کرلیا ہے اور یہ فارماسوٹیکل کمپنیوں کے لئے اہم سنگ میل ثابت ہوگا۔

ڈاکٹر تجمل حسین نے اپنی ریسرچ کو کینسر کے مرض میں مبتلا اپنی مرحومہ والدہ کے نام سے منسوب کرنے کا اعلان کیا ہے، ڈاکٹر تجمل حسین کا تعلق پاکستان کے شہر چنیوٹ سے ہے جنہوں نے گورنمنٹ کالج یونیورسٹی فیصل آباد سے بی ایس آنرز بائیو انفارمیٹکس جبکہ نیشنل ایگری کلچر ریسرچ سنٹر اسلام آباد سے ایم فل کی ڈگری حاصل کی تھی اور آج کل جرمنی میں مقیم ہیں۔

ان کی اہلیہ ڈاکٹر مہوش تجمل نے بھی جرمنی کے میکس پلانٹ انسٹی ٹیوٹ سے اسکالر شپ پر پی ایچ ڈی کرنیوالی پہلی پاکستانی طالبہ ہیں، جنہوں نے پلانٹ سائنسز  پر ریسرچ کی، ان کا آرٹیکل بھی دنیا کے بہترین جرنل امریکن سوسائٹی آف پلانٹ بیالوجسٹ میں شائع ہوا۔

ڈاکٹر تجمل اور ڈاکٹر مہوش تجمل دونوں نے 2019میں جرمنی سے پی ایچ ڈی مکمل کرنیکا اعزاز حاصل کیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں