The news is by your side.

Advertisement

سانحہ نیوزی لینڈ: دنیا بھر میں سوگ، ترکی میں غائبانہ نمازِ جنازہ کی ادائیگی

استنبول: نیوزی لینڈ میں ہونے والی دہشت گردی میں شہید ہونے والے 50 مسلمانوں کی غائبانہ نماز جنازہ ادا کی گئی، ترک صدر کا کہنا تھا کہ حملہ آور کے ترکی آنے کی تحقیقات کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق نیوزی لینڈدہشت گردی میں50مسلمانوں کی شہادت پردنیا بھر میں سوگ منایا جارہا ہے، نیوزی لینڈ، آسٹریلیا، امریکا، برطانیہ اور یورپ کے بہت سارے ممالک میں شہداء کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا گیا۔

استنبول میں شہدا کی غائبانہ نمازجنازہ ادا کی گئی جس میں ترک صدر سمیت ہزاروں افراد نے شرکت کی اور شہداء کے درجات کی بلندی کے لیے خصوصی دعا کی۔

اس موقع پر ترک صدر نے اعلان کیا کہ ایسی اطلاعات موصول ہوئیں کہ مساجد پر فائرنگ کرنے والا حملہ آور 2 بار ترکی آیا، اس بات کی تحقیقات کریں گے، سیکیورٹی حکام کو کوائف جمع کرنے کی ہدایت جاری کردی۔

نیوزی لینڈ مین ہونے والی دہشت گردی کے خلاف بنگلا دیش کے دارالحکومت ڈھاکا میں احتجاجی مظاہرہ ہوا جس میں ہزاروں افراد نے شرکت کر کے متاثرین سے اظہارِ یکجہتی کیا۔

علاوہ ازیں برطانوی دارالحکومت ہائیڈ پاک سے ٹین ڈاؤنگ اسٹریٹ تک شہریوں نے ریلی نکالی اور دہشت گردی کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے حملہ آور کو کیفر کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کیا۔ ایتھرز میں بھی شہری سڑکوں پر نکلے اور انہوں نے سانحہ نیوزی لینڈ کو نسل پرست حملہ قرار دے کر شدید احتجاج کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں