site
stats
ماحولیات

اگلا ہفتہ سال کا گرم ترین ہفتہ ہونے کا امکان

اسلام آباد: صوبہ سندھ میں گزشتہ 3 روز سے گرمی کی شدید لہر جاری ہے تاہم محکمہ موسمیات نے خبردار کیا ہے کہ آئندہ آنے والا ہفتہ نہ صرف مزید گرم ہوگا بلکہ یہ پورے سال کا گرم ترین ہفتہ ہوگا۔

محکمہ موسمیات پاکستان کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر غلام رسول کا کہنا ہے کہ اگلا ہفتہ سال کا گرم ترین ہفتہ رہنے کا امکان ہے اور اس دوران پورے ملک میں شدید گرمی ہو جائے گی۔

تفصیلات بتاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک کے وسطی علاقوں میں درجہ حرات 45 سے 46 ڈگری سینٹی گریڈ رہنے کا امکان ہے، جبکہ اندرون سندھ یہ 48 سے 49 ڈگری سینٹی گریڈ تک جا پہنچے گا۔

مزید پڑھیں: ہیٹ اسٹروک کی وجوہات، علامات اور بچاؤ

ان کے مطابق بلوچستان کے میدانی علاقوں میں درجہ حرارت 42 سے 44 سینٹی گریڈ اور جنوبی پنجاب میں 45 سے 47 سینٹی گریڈ کے درمیان رہے گا۔ علاوہ ازیں گلگت بلتستان، چترال اور دیگر شمالی علاقہ جات میں بھی درجہ حرارت 30 ڈگری سینٹی گریڈ سے تجاوز کر جائے گا۔

ڈاکٹر غلام رسول کے مطابق وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بھی درجہ حرارت 40 ڈگری سینٹی گریڈ سے زائد رہے گا۔

انہوں نے بتایا کہ اسلام آباد میں اس سے قبل سنہ 2006 میں درجہ حرات 40 ڈگری سینٹی گریڈ سے تجاوز کر گیا تھا اور یہ 29 اپریل کو ہوا تھا۔

ان کے مطابق اپریل کے اواخر یا مئی میں ملک کے مختلف حصوں کا درجہ حرارت 40 ڈگری سینٹی گریڈ سے بڑھ جانا معمول کی بات ہے، تاہم اس بار موسم کی شدت اپریل کے وسط سے ہی ظاہر ہونا شروع ہوگئی ہے۔

مزید پڑھیں: سال 2016 تاریخ کا متواتر تیسرا گرم ترین سال

ڈاکٹر غلام رسول کا کہنا تھا کہ ملک میں فی الحال بارش کا کوئی امکان نہیں، موسم گرم اور خشک رہے گا، البتہ کراچی سمیت دیگر ساحلی علاقوں میں سمندر کی ہوائیں چلتی رہیں گی۔

سنہ 2015 جیسی ہیٹ ویو

ڈاکٹر غلام رسول نے کہا کہ رواں برس کراچی میں سنہ 2015 جیسی ہیٹ ویو کا امکان ہے جس میں 1 ہزار سے زائد افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے۔

ان کے مطابق محکمہ نے اس بارے میں پہلے ہی باقاعدہ الرٹ جاری کردیا ہے اور تمام متعلقہ اداروں اور اسپتالوں بشمول جناح اسپتال کراچی کو بھی آگاہ کردیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ ڈاکٹر غلام رسول موسم سرما کے اختتام پر ہی آگاہ کر چکے تھے کہ رواں برس پورے ملک میں موسم گرما اپنے مقررہ وقت سے قبل آجائے گا جس کے بعد درجہ حرارت میں غیر معمولی اضافے کا امکان ہے۔

ماہرین اس کی وجہ موسمی تغیرات یعنی کلائمٹ چینج اور اس کی وجہ سے عالمی درجہ حرارت میں ہونے والے اضافے یعنی گلوبل وارمنگ کو قرار دے رہے ہیں۔

مزید پڑھیں: کلائمٹ چینج سے مطابقت کیسے کی جائے؟

مزید پڑھیں: گلوبل وارمنگ کم کرنے کے طریقے

یاد رہے کہ کلائمٹ چینج کے نقصانات کا سامنا کرنے کے حوالے سے پاکستان پہلے 10 ممالک میں شامل ہے اور اس کا سب سے بدترین نقصان پورے ملک کے درجہ حرارت میں اضافہ ہے جو پانی کے ذخائر اور زراعت کو نقصان پہنچا رہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top