The news is by your side.

Advertisement

ادب کا نوبیل انعام امریکی شاعرہ کے نام

رواں سال ادب کا نوبیل انعام لوئیس گلک کے نام کیا گیا ہے۔ 77 سالہ لوئیس گلک گزشتہ ایک دہائی کے دوران ادب کا نوبیل جیتنے والی چوتھی خاتون ہیں۔

لوئیس گلک امریکا کی باسی اور شاعرہ ہیں۔ اس صنفِ سخن میں ان کی وجہِ شہرت بچپن اور خاندانی زندگی کو اپنی شاعری کا موضوع بنانا ہے۔

نوبیل انعام کا اعلان کرنے کے لیے قائم کردہ اکیڈمی کے مطابق ’ شاعرہ کا سادہ، دل کش اور واضح شاعرانہ لہجہ انفرادیت کو آفاقی رنگ دیتا ہے۔‘

لوئیس گلک 1993 میں اپنے شعری مجموعہ کلام ’دی وائلڈ آئرس‘ پر پلٹزر ایوارڈ کی حق دار ٹھہری تھیں‌ جب کہ 2014 میں انھیں ’فیتھ فل اینڈ ورچوئس نائٹ‘ کے لیے نیشنل بک ایوارڈ بھی دیا جا چکا ہے۔

اکیڈمی کے مستقل سیکریٹری میٹس مالم نے ادب کے اس ایوارڈ کا اعلان کرنے سے قبل شاعرہ سے رابطہ کیا اور ان سے بات بھی کی۔

اکیڈمی کی جانب سے خبر رساں‌ اداروں‌ کو پہنچنے والے بیان کے مطابق ’ گلک عالمگیریت کی متلاشی ہیں اور وہ اپنے بیشتر کاموں میں اوہام اور کلاسیکی نقشوں سے مدد لیتی ہیں۔‘

بیان میں مزید کہا گیا کہ گلک انقلابی تبدیلی اور ازسرِنو جنم کی شاعرہ ہیں، جن کی ایک نظم ’سنو ڈراپ‘ میں موسمِ سرما کے بعد زندگی کی کرشماتی واپسی کو خوب صورتی سے بیان کیا گیا جب کہ ان کے ہاں ’مزاح اور چوٹ کرنے‘ کا عنصر بھی دیکھا جاسکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں