The news is by your side.

Advertisement

سندھ اسمبلی میں بدنظمی،اپوزیشن رہنما "چارپائی” ایوان میں لے آئے

کراچی: سندھ اسمبلی میں ایک بار پھر شدید بد نظمی ہوئی، جہاں اپوزیشن ارکان بطور احتجاج ایوان میں چارپائی لے آئے۔

تفصیلات کے مطابق اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی زیر صدارت اجلاس جاری ہے، اسمبلی میں اس وقت شدید بدنظمی پیدا ہوئی جب اپوزیشن ارکان بطور احتجاج چارپائی اور بستر ایوان میں لے آئے، اپوزیشن ارکان کا کہنا تھا کہ ” یہ جمہوریت کا جنازہ ہے”۔

اپوزیشن ارکان کی جانب سے چارپائی لانے اور جمہوریت سے متعلق ریمارکس پر حکومتی ارکان نے اپوزیشن کو آڑے ہاتھوں لیا اور جملے کسے، جس کے باعث دونوں جانب سے شدید ہنگامہ آرائی اور شور شرابہ کیا گیا، اسپیکر سندھ اسمبلی ارکان کو تحمل مزاجی سے کام لینے کی ہدایت کرتے رہے مگر حکومت و اپوزیشن ارکان نے ان کی ایک نہ سنی۔

اہم ترین اجلاس کے دوران چارپائی اور بستر کیسے ایوان تک لایا گیا؟ سیکیورٹی عملہ واقعے سے بے خبر رہا۔

دوران اجلاس اسپیکر نے ریمارکس دئیے کہ اراکین اسمبلی نے سندھ اسمبلی کے قوائد کی خلاف ورزی کی ہے۔

اس موقع پر حکومتی رکن اور صوبائی وزیر بلدیات ناصر حسین شاہ نے کہا کہ وفاقی حکومت صحافیوں کےحق میں بل پاس نہیں ہونےدیناچاہتی، گورنرسندھ نے غیرضروری اعتراضات لگاکر بل واپس بھیجا، یہ جرنلسٹ پروٹیکشن بل میں رکاوٹیں ڈال رہےہیں۔

حکومتی رکن مکیش کمار نے اپوزیشن کو آڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ پہلے بل منظور کرانے میں ساتھ دیتے ہیں پھر گورنر سے واپس بھجواتےہیں، پی ٹی آئی نے جو ملک کا جنازہ نکالا اس کی بات کریں، چینی چوروں کو ملک سے بھگا کر لےگئے اس جنازےکی بات کریں، پورے ملک غریبوں کا جنازہ نکال دیا کچھ حیاکچھ شرم ہوتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں