The news is by your side.

Advertisement

شمالی کوریا نے ایک اور بیلسٹک میزائل کا تجربہ کر لیا

پیانگ یانگ: جنوبی کوریا کی جانب سے آب دوز لانچ ہونے کے چند ہی گھنٹے بعد شمالی کوریا کی طرف سے بھی ایک اور بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ادھر اقوام متحدہ میں شمالی کوریا کے سفیر نے میزائل تجربات کے خلاف امریکی پالیسی کو مسترد کیا، اور ادھر شمالی کوریا نے ایک اور بیلسٹک میزائل کا تجربہ کر لیا۔

جنوبی کوریا کی ملٹری کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ شمالی کوریا کی فوج نے ملک کے مشرقی ساحل کی جانب ایک ’نامعلوم پروجیکٹائل‘ داغا ہے، جب کہ جاپانی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ یہ بظاہر ایک بیلسٹک میزائل تھا۔

میزائل کا تجربہ کرنے سے کچھ دیر پہلے ہی شمالی کوریا کے سفیر کم سانگ نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب میں کہا کہ ان کے ملک کو قانونی دفاع کے حق سے کوئی بھی محروم نہیں رکھ سکتا، اور ان کے ملک کو میزائل تجربات کرنے کا حق حاصل ہے۔

ایک ماہ کے دوران شمالی کوریا کا میزائلوں کا یہ تیسرا تجربہ ہے، اس سے قبل اس نے ایک کروز میزائل اور دو بیلسٹک میزائلز کا تجربہ کیا تھا، واضح رہے کہ اقو ام متحدہ نے شمالی کوریا پر میزائلوں کے تجربات پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔

میزائل کے تجربے کے فوراً بعد جنوبی کوریا کی حکومت نے قومی سلامتی کونسل کی میٹنگ طلب کی اور میزائل تجربے کی مذمت کرتے ہوئے کہا یہ ایک کم فاصلے تک پہنچنے والا میزائل تھا اور شمالی کوریا نے ایسے وقت اس کا تجربہ کیا ہے جب کوریا جزیرہ نما میں سیاسی استحکام کی صورت حال بہت نازک ہے۔

امریکی وزارت خارجہ نے بھی میزائل تجربے کی مذمت کی ہے اور پیانگ یانگ سے مذاکرات کی اپیل کی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں