The news is by your side.

سیلاب زدہ حاملہ خواتین اور بچوں کے لیے غذائی ساشے متعارف کرانے کا فیصلہ

اسلام آباد: ملک بھر میں سیلاب زدہ حاملہ خواتین اور بچوں کے لیے ایک خصوصی غذائی ساشے متعارف کرایا جا رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی حکومت نے سیلاب سے متاثرہ علاقوں کی حاملہ خواتین اور بچوں کے لیے خصوصی غذائی ساشے متعارف کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزارت قومی صحت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ غذائی ساشے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں موجود غذائی قلت کی شکار حاملہ خواتین اور لاغر بچوں کو فراہم کیے جائیں گے۔

یہ ساشے حاملہ خواتین اور بچوں کے لیے ضروری منرلز اور ضروری غذائی اجزا سے بھرپور ہوں گے، جو دن میں ایک بار کھایا جا سکے گا۔

ذرائع کے مطابق سیلاب زدہ علاقوں کے لیے غذائی ساشے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے تعاون سے مرحلہ وار بھجوائے جائیں گے۔ پہلے فیز میں مخصوص اضلاع کی 4 لاکھ خواتین، اور بچوں کو طبی معائنے کے بعد غذائی ساشے فراہم ہوں گے۔

ذرائع کے مطابق ہر فرد کو 7 عدد غذائی ساشے فراہم کیے جائیں گے۔ ہیلتھ ورکرز غذائی قلت کی جانچ کے لیے حاملہ خواتین اور بچوں کے قد، وزن، بازو کی پیمائش کریں گے۔

ذرائع کے مطابق پہلے مرحلے میں دستیاب 4 لاکھ غذائی ساشے میں سے 30 فی صد سندھ جب کہ 25 فی صد بلوچستان کو فراہم کیے جائیں گے۔ 15 فی صد غذائی ساشے خیبر پختون خوا، اور 15 فی صد پنجاب جب کہ بقیہ 15 فی صد آزاد کشمیر، گلگت بلستان اور اسلام آباد کی حاملہ خواتین اور لاغر بچوں میں تقسیم کیے جائیں گے۔

حاملہ خواتین اور بچوں کے لیے غذائی ساشے عالمی ادارے یونیسیف کی جانب سے فراہم کیے گئے ہیں، جب کہ مقامی طور پر تیار کردہ غذائی ساشے بھی تقسیم کیے جائیں گے۔ سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں غذائی ساشے کی تقسیم مقامی ضلعی انتظامیہ اور محکمہ صحت کے تعاون سے کی جائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں