The news is by your side.

Advertisement

‘قوم کی جانب سے ملنے والے محبت لفظوں میں بیان نہیں کرسکتا’

ٹوکیو اولمپکس میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے اولمپیئن ارشد ندیم کہتے ہیں کہ قوم کی جانب سے جو محبت ملی، اسے لفظوں میں بیان نہیں کرسکتا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کی نجی یونیورسٹی میں اولمپیئن ارشد ندیم کے اعزاز میں تقریب کا انعقاد کیا گیا، یونیورسٹی آمد پرارشد ندیم کا شاندار استقبال کیا گیا۔

بعد ازاں طلبا سے گفتگو میں ارشد ندیم نے بتایا کہ اولمپکس میں جیولین تھرو کے فائنل راؤنڈ میں ان پر بہت دباؤ تھا ساتھ ہی جاپان کی شدید گرمی نے بھی انہیں پریشان کیا۔

ارشد ندیم نے طلبا کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ کسی بھی شعبے میں کامیابی کے لیے محنت اور جستجو کی ضرورت ہوتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:ارشد ندیم نے قوم سے معافی مانگ لی

واضح رہے کہ ٹوکیو اولمپکس کے جیولین تھروکے فائنل مقابلے میں 12 ایتھلیٹ پہلے مرحلے میں شامل تھے جن میں سے ٹاپ 8 نے اگلے راؤنڈ میں جگہ بنائی۔ ان میں ارشد ندیم 84.62 کے اسکور کے ساتھ چوتھے نمبر پر رہے۔

میڈل راؤنڈ میں ٹاپ تین کھلاڑیوں کو گولڈ، سلور اور برانز میڈل کا حقدار ٹھہرنا تھا تاہم اس راؤنڈ میں ارشد ندیم متاثر کن کارکردگی نہ دکھا سکے اور میڈل کی دوڑ سے باہر ہوئے، دوسرے راؤنڈ میں پاکستان کے ارشد ندیم پانچویں نمبر پر رہے۔

بھارت کے نیرج چوپڑا نے اس مقابلے میں گولڈ، جمہوریہ چیک کے جیکب واڈلیچ نے سلور اور جمہوریہ چیک ہی کے ویتے سلاف ویسلے نے برانز میڈل اپنے نام کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں