The news is by your side.

Advertisement

دل، گردے اور معدے کا دوست پھل

دنیا کے گرم علاقوں میں کاشت کیا جانے والا پھل نارنگی خدا کی دی ہوئی نعمتوں میں سے ایک ہے، یہ نہ صرف خوش ذائقہ، فرحت بخش ہے بلکہ صحت کے لیے بہت مفید ہے۔

دنیا بھر میں سٹرس فروٹ بہت پسند کیے جاتے ہیں اور نارنگی پھلوں کے اسی گروہ میں شامل ہے۔ اسے ہم سنگترہ بھی کہتے ہیں۔

نارنگی دل، معدے اور دورانِ خون سے متعلق امراض اور رکاوٹوں کا مقابلہ کرنے کی خاصیت رکھتا ہے۔ طبی ماہرین اس کی اہمیت اور افادیت کے پیشِ نظر اسے ہر عمر کے انسانوں کو ضرورت کے مطابق استعمال کرنے پر زور دیتے ہیں۔

یہ پھل وٹامن سی، فولیٹ، تھیامین اور اینٹی آکسیڈنٹس کا مجموعہ ہے۔

یہ پھل بنیادی طور پر کاربوہائیڈریٹس اور پانی کی زائد مقدار کی وجہ سے صحت کے لیے بہت مفید ثابت ہوتا ہے۔

طبی سائنس کے مطابق یہ پھل فائبر کا بھی اہم ذریعہ ہے اور یہ معدنیات بالخصوص وٹامن سی، فولیٹ، پوٹاشیم اور تھیامین بھی فراہم کرتا ہے۔

طبی تحقیق بتاتی ہے کہ نارنگی میں موجود فلیوو نوائڈ بالخصوص ہیسپیریڈن دل کے امراض کے خلاف مزاحمت کرنے والا جزو ہے۔ ماہرین کے مطابق چار ہفتوں تک نارنگی کا جوس استعمال کر کے خون پتلا کرنے میں مدد لی جاسکتی ہے۔ اسی طرح نارنگی میں موجود فائبر بھی بلڈ پریشر کو کم کرنے اہم کردار ادا کرتا ہے۔

بعض طبی مطالعے بتاتے ہیں کہ یہ گردوں کو پتھری سے محفوظ رکھنے میں بھی مدد دیتا ہے۔

نارنگی جسم میں آئرن کی کمی بھی دور کرتا ہے اور قوت مدافعت بڑھاتا ہے۔

اس پھل پر طبی تحقیق سے ثابت ہوا ہے کہ یہ قبض دور کرتا ہے اور اس کی مدد سے معدے کے السر سے نجات حاصل کی جاسکتی ہے۔ تاہم اس حوالے سے مستند اور ماہر ڈاکٹر کی ہدایات پر عمل کرنا ضروری ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں