The news is by your side.

Advertisement

کرتارپور راہداری: پاکستانی وفد کا بھارت جانا ہمسائے کے ساتھ اچھے تعلقات کی طرف قدم ہے، دفتر خارجہ

اسلام آباد: دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا ہے کہ پاکستانی وفد کا کرتارپور راہ داری پر بات چیت کے لیے بھارت جانا ہمسائیگی کے اچھے تعلقات کی طرف قدم ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کے دوران ڈاکٹر فیصل نے پاکستانی وفد کے بھارت جانے کو مثبت ہم سائیگی کی طرف اٹھایا جانے والا پہلا قدم قرار دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ بھارتی حکومت نے درخواست کی تھی کہ پاکستانی وفد دہلی کی بجائے واہگہ اٹاری پر مذاکرات کے لیے آئے۔

ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ پاکستانی وفد مذاکرات کے لیے بھارت جا رہا ہے، یہ وزیر اعظم عمران خان کے کرتارپور وژن اور اسپرٹ کا عکاس ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ آج اٹاری کے مقام پر ہونے والے مذاکرات کرتارپور پر ملاقاتوں کا پہلا سلسلہ ہے، ہم ایک مثبت پیغام لے کر جا رہے ہیں، بھارت سے بھی آگے آنے کی امید ہے۔

یہ بھی پڑھیں:  کرتار پور راہداری پراجلاس ، بھارت کا پاکستانی صحافیوں کو ویزہ دینے سے انکار

خیال رہے کہ کرتارپور راہ داری پر مذاکرات کی کوریج کے لیے پاکستان نے بھارت کو پاکستانی صحافیوں کو ویزا دینے کی درخواست کی تھی جسے انڈیا نے مسترد کر دیا، جس پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نے اس اقدام کو افسوس ناک قرر دیا۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان نے کرتار پور رہ داری کی سنگ بنیاد کے موقع پر 30 بھارتی صحافیوں کو ویزے جاری کیے تھے اور ان صحافیوں کی وزیر اعظم سے ملاقات بھی کرائی گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں