The news is by your side.

Advertisement

افغانستان میں جنگ کا سب سے زیادہ نقصان پاکستان کو ہوا، وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ پاکستان سے افغانستان میں کارروائی کی ہرگز اجازت نہیں دیں گے کیونکہ افغانستان میں جنگ کاسب سےزیادہ نقصان پاکستان کوہوا، اب کسی بھی قسم کی محازآرائی کاحصہ نہیں بنناچاہتے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے غیرملکی نیوزویب سائٹ ایگزیاس کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا کو افغانستان سے نکلنے سے پہلے سیاسی تصفیہ کرنا چاہیے، یہ ممکن ہی نہیں امریکا کو فوجی اڈے دیں، پاکستان سےافغانستان میں کارروائی کی ہرگزاجازت نہیں دیں گے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ میں افغان طالبان کا ترجمان نہیں لیکن افغانستان میں جنگ کاسب سےزیادہ نقصان پاکستان کوہوا، اس جنگ میں 70ہزارسےزائدپاکستانی شہیدہوئے، پاکستان نے دیگر ممالک کےنسبت سب سےزیادہ قربانیاں دیں، اب کسی بھی قسم کی محازآرائی کاحصہ نہیں بنناچاہتے، پاکستان میں اس وقت 30لاکھ افغان پناہ گزین ہے۔

بھارت کے حوالے سے عمران خان نے کہا کہ بھارت سے ہماری 3جنگیں ہوئیں، پاکستان کاجوہری پروگرام صرف ملکی دفاع کیلئے ہے، امن چاہتے ہیں محاز آرائی نہیں چاہتے، جوہری ہتھیاروں کے خلاف ہوں، ہمارے ہتھیار دفاع کیلئے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ چین نےہرمشکل وقت میں پاکستان کاساتھ دیا ، چین نے پاکستان کومعاشی طور پر مستحکم ہونے کیلئے ریسکیو کیا، تاہم 11ستمبرکےحملوں کے بعد یورپ میں مسلمانوں کے خلاف نفرت بڑھی۔

صحافی نے سوال کیا کہ امریکاکےمقابلےمیں پاکستان کس طرح کوروناسےبہترطریقےسےنمٹ پایا ، جس پر وزیراعظم نے بتایا کہ یورپ میں کورونا سے اسپتال بھرے تو پاکستان میں مکمل لاک ڈاؤن کا مطالبہ زورپکڑا، پاکستان میں تمام بڑےسیاسی رہنماؤں،اپوزیشن نےمکمل لاک ڈاؤن چاہا،میں یہ سوال کرتا رہا مکمل لاک ڈاؤن کیا تو غریب افراد کا کیا بنے گا۔

عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان میں 75فیصدورکرزغیر رسمی معیشت سےوابستہ ہیں، یورپ کی صورتحال دیکھتےہوئےصوبوں نےمکمل لاک ڈاؤن نافذکیا، لاک ڈاؤن کے2، 3ہفتےبعدغریب علاقےمیں لوگ امدادکےحصول کیلئےگاڑیوں پرچڑھ دوڑے، آپ بھوک کےشکارافرادکولاک ڈاؤن نہیں کر سکتے۔

انھوں نے کہا کہ ہم صورتحال کومدنظررکھتےہوئےاسمارٹ لاک ڈاؤن کی طرف گئے، ملک میں اسمارٹ لاک ڈاؤن لگاکرسب سےبہترفیصلہ کیا، این سی اوسی میں ملک بھرسے یومیہ اعدادوشمار اکٹھے کرکےڈیٹامرتب کیاگیا، ہم نےکوروناکےخلاف فوج اورتمام صوبوں کومتحرک کیا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ این سی اوسی میں متعدی امراض کےماہر ڈاکٹرزمانیٹرنگ کرتےرہے، ہم نےکوروناہاٹ اسپاٹ علاقوں میں اسمارٹ لاک ڈاؤن لگایا، ہاٹ اسپاٹ علاقوں میں اسمارٹ لاک ڈاؤن لگاکرصورتحال کوکنٹرول کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں