The news is by your side.

Advertisement

تنظیم انصار السلام کا پارلیمنٹ لاجز پر دھاوا، مقدمہ درج

اسلام آباد: پارلیمنٹ لاجز کی خلاف ورزی کرنے پر تنظیم انصار السلام کے رضا کاروں کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق مقدمہ کار سرکار مداخلت، دفعہ 144کی خلاف ورزی دفعات کے تحت تھانہ سیکریٹریٹ میں درج کیا گیا ہے، مقدمے میں اٹھارہ معلوم جبکہ 25سے30نامعلوم افراد کو نامزد کیا گیا ہے۔

مقدمہ متن کے مطابق گذشتہ روز 40سے50رضاکار پارلیمنٹ لاجز کےسامنےسیکیورٹی مشقیں کرتے رہے، اس جھتے نے لاجز کے مین گیٹ کا کنٹرول سنبھالا اور پھر اندر داخل ہوگئے۔

تھانہ سیکریٹریٹ میں درج مقدمے کے متن میں کہا گیا کہ سرچ وارنٹ حاصل کرکے پولیس اور انتظامیہ لاجز پہنچی، جہاں مخصوص وردی میں ملبوس رضا کار کمرہ نمبر 401میں موجود تھے، ان افراد کی موجودگی یہ ظاہر کرتی رہی کہ لاجز کی سیکیورٹی تقریباً غیر موثر ہو چکی۔

مقدمہ متن میں بتایا گیا کہ کمرہ میں موجود افراد سے مذاکرات کی کوشش بھی کی گئی، اس دوران کمرہ میں موجود افراد نے رضا کاروں کو حوالے کرنے سے انکار کیا اور مزاحمت شروع کردی، اس دوران کمرہ نمبر 401 کی سینٹر میز کا شیشہ ٹوٹ گیا۔

یہ بھی پڑھیں: جے یو آئی کے گرفتار تمام کارکنان کورہا کردیا گیا

حالات کشیدہ ہونے پر کمرہ میں موجود افراد نے باقی کمروں میں اپنے آپ کو بند کر لیا جبکہ انصارالسلام کے کچھ رضاکاروں کو گرفتار کیا گیا تو انہوں نے مزاحمت کرتے ہوئے سرکاری گاڑی کے شیشے توڑ ڈالے۔

واضح رہے کہ آج صبح پارلیمنٹ لاجز میں گھسنے والے جے یوآئی کےتمام گرفتار کارکناں کو صبح سویرے رہا کردیا گیا تھا، ان کارکنان کو تھانہ آبپارہ سے شخصی ضمانت پر رہا کیا گیا۔

ترجمان جے یوآئی نے تمام کارکنان کی رہائی کی تصدیق کی تھی جبکہ اسلام آباد پولیس کا موقف تھا کہ گرفتار کارکنوں کی رہائی سے متعلق تمام قانونی تقاضے پورے کیے گئے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں