The news is by your side.

Advertisement

سوشل میڈیا پر کرکٹرز کی منفی خبروں سے پی سی بی ناخوش

لاہور: سوشل میڈیا پر قومی کرکٹرز کی منفی خبروں کی گردش پر پاکستان کرکٹ بورڈ نے نا خوشی کا اظہار کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پی سی بی اس بات پر نا خوش ہوا ہے کہ قومی کھلاڑیوں کے اسکینڈل سماجی رابطوں کی ویب سائٹس کی زینت بن رہے ہیں جن سے ٹیم کا تشخص داغ دار ہو رہا ہے۔

ذرایع کا کہنا ہے کہ کرکٹرز کی منفی خبروں کے بعد پی سی بی متحرک ہو گیا ہے، حکام کو اس بات احساس ہے کہ منفی خبروں سے پاکستان اور ٹیم کا امیج خراب ہوتا ہے۔

ذرایع پی سی بی کے مطابق پلیئرز ایجوکیشن پروگرام پر سختی سے عمل درآمد کرانے کا فیصلہ کیا گیا ہے، کھلاڑیوں کو ٹیکنالوجی کے استعمال، محتاط اور ذمہ دارانہ رویے کی تعلیم دی جائے گی۔

ذرایع نے بتایا کہ پی سی بی نے امام الحق کے معاملے کی تحقیقات مکمل کر لی ہیں، کرکٹرز کو بد نام کرنے والوں کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی منصوبہ بندی بھی کر لی گئی ہے۔

پی سی بی نے کوڈ آف کنڈکٹ اور سینٹرل کنٹریکٹ کی شقوں کا از سرِ نو جائزہ لینے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔

پی سی بھی ذرایع نے یہ بھی بتایا کہ ورلڈ کپ میچز کے دوران کھلاڑیوں کے کمروں تک غیر متعلقہ افراد کی رسائی نہیں تھی۔

خیال رہے کہ ٹیسٹ کرکٹر امام الحق پر لڑکیوں کو بے وقوف بنانے اور انھیں دھوکا دینے کے الزامات لگائے گئے ہیں، امام الحق کیرئیر کے آغاز سے ہی تنقید کی زد میں ہیں اور اچھی پرفارمنس کے باوجود قومی ٹیم میں ان کی شمولیت متنازع رہی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں