ہفتہ, جون 22, 2024
اشتہار

عدالتی کارروائی کی رپورٹنگ پر پابندی کا پیمرا نوٹیفکیشن عدالت میں چیلنج

اشتہار

حیرت انگیز

اسلام آباد : عدالتی کارروائی کی رپورٹنگ پر پابندی کا پیمرا نوٹیفکیشن اسلام آباد اور لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق عدالتی کارروائی کی رپورٹنگ پر پابندی کے پیمرا نوٹیفکیشن کیخلاف اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دائر کردی گئی

اسلام آباد ہائیکورٹ جرنلسٹس ایسوسی ایشن اور پریس ایسوسی ایشن آف سپریم کورٹ نے نوٹیفکیشن کے خلاف درخواست دائر کی۔

- Advertisement -

درخواست گزار سپریم کورٹ اور ہائیکورٹ رپورٹرز کی نمائندہ تنظیمیں ہیں، پیمرا کے نوٹیفکیشن کیخلاف درخواست میں سیکرٹری اطلاعات اور چیئرمین پیمرا کو فریق بنایا گیا۔

درخواست میں کہا گیا کہ پیمرا نے 21 مئی کو ترمیمی نوٹیفکیشن کے ذریعے عدالتی رپورٹنگ پرہدایات جاری کیں، پیمرا نوٹیفکیشن آئین کے آرٹیکل 19 اور 19 اے کی خلاف ورزی ہے، سپریم کورٹ کے فیصلے کی پیمراکے نوٹیفکیشن میں غلط تشریح کی گئی

درخواست میں استدعا کی گئی کہ پیمرا کا نوٹیفکیشن غیرآئینی قرار دے کر کالعدم کیاجائے، درخواست پرحتمی فیصلےتک پیمرا کا نوٹیفکیشن معطل کیا جائے۔

دوسری جانب پیمرا کی جانب سے عدالتی کارروائی کی کوریج پر پابندی کااقدام لاہورہائیکورٹ میں ثمرہ ملک ایڈووکیٹ نے چیلنج کیا۔

درخواست گزار نے کہا کہ پیمرا کا 21مئی کو جاری کردہ نوٹیفکیشن غیر قانونی ہے ، پیمرا کا نوٹیفکیشن آئین کےآرٹیکل19اور19اےکی خلاف ورزی ہے۔

درخواست گزار نے استدعا کی کہ عدالت پیمرا کی جانب سے پابندی کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دے اور درخواست کے حتمی فیصلہ تک پیمرا کا نوٹیفکیشن معطل کیا جائے۔

یاد رہے پیمرا نے زیرسماعت کیسزسےمتعلق خبریں چلانےپرپابندی عائد کی ہے، پیمرا نے ہدایت جاری کی کسی بھی کیس کا حتمی فیصلہ آنےتک ٹی وی چینلز عدالتی سماعت کی خبرنہیں چلائیں گے اور زیرسماعت کیسزسےمتعلق صرف وہ معلومات دی جائیں گی جومفادعامہ کے لیےہوں گی۔

Comments

اہم ترین

ویب ڈیسک
ویب ڈیسک
اے آر وائی نیوز کی ڈیجیٹل ڈیسک کی جانب سے شائع کی گئی خبریں

مزید خبریں