The news is by your side.

Advertisement

تشدد سے پرویز الہٰی زخمی

لاہور: پنجاب اسمبلی میں ہنگامہ آرائی کے دوران ق لیگ کے بزرگ رہنما پرویز الہٰی زخمی ہو گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی میں آج دن بھر ہنگامہ آرائی کی صورت حال رہی، حتیٰ کہ پولیس کو بھی طلب کیا گیا، ہنگامہ آرائی کے دوران ن لیگی اراکین نے پرویز الہٰی کو دھکے اور تھپڑ مارے، جس سے وہ زخمی ہو گئے ہیں۔

ن لیگی ارکان حکومتی ارکان پر ٹوٹ پڑے اور مار مار کر انھیں باہر نکالنے لگے تھے، ن لیگی اور پی پی ارکان ایوان میں وکٹری کے نشان بھی بناتے رہے، انھوں نے ایک ایک کر کے تشدد کے بعد حکومتی ارکان کو باہر نکالا۔

پرویز الہٰی کو تشدد کے بعد اسمبلی میں آکسیجن بھی لگایا گیا، اور فوٹیج میں ان کی کلائی پر پٹی بندھی دیکھی جا سکتی ہے، انھوں نے کہا کہ میرا بازو توڑ دیا گیا ہے، رانا مشہود مجھ پر چڑھا تھا، انھوں نے اتنا مارا کہ مجھے ہوش ہی نہیں رہا۔

پنجاب اسمبلی کے ایوان میں پولیس داخل، کئی پی ٹی آئی ایم پی ایز حراست میں لے لیے گئے

پرویز الہٰی نے مزید کہا کہ وہ نعرے لگا رہے تھے کہ مار دو، انھوں نے مجھے حملہ کروا کر مروانے کی کوشش کی ہے، میں کس عدالت کے پاس جاؤں، میرے لیے کوئی عدالت نہیں میں کہاں جاؤں، ویسے عدالتیں رات ایک ایک بجے تک کھلتی ہیں، میں ان کے سوموٹو سے تنگ ہوں۔

واضح رہے کہ آج حکومتی اراکین نے ڈپٹی اسپیکر پر حملہ کر کے ایوان کا تقدس بری طرح پامال کیا تھا، جس کے بعد پولیس کمانڈوز اور اینٹی رائٹ فورس پنجاب اسمبلی میں دوسری بار داخل ہوئی، پولیس نے مزاحمت کرنے والے 3 حکومتی ایم پی ایز واثق عباسی، ندیم قریشی اور اعجاز حجازی کو زیر حراست لے لیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں