The news is by your side.

Advertisement

وزیراعظم کابینہ کوبائی پاس نہیں کرسکتے،سپریم کورٹ

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان کا کہنا ہے کہ ’’آئین میں کہیں نہیں لکھا کہ وزیراعظم تنہاوفاقی حکومت ہے‘‘۔

تفصیلات کےمطابق سپریم کورٹ میں جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے حکومت کی نظرثانی درخواست پرسماعت کی جس پر عدالت نےوفاق کی جانب سے دائراپیل میں وزیراعظم کوکابینہ کو بائی پاس کرنےسے روک دیا۔

جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئےکہا کہ ’’آئین میں وزیراعظم کی سولوفلائٹ کی گنجائش نہیں ہے‘‘،ٹیکس استثنیٰ اور لیوی ٹیکس کا نفاذ وفاقی حکومت کا اختیار ہے۔

عدالت عظمیٰ کےتین رکنی بینچ نےریمارکس دیےکہ رولزکبھی بھی آئین سےبالاتر نہیں ہو سکتے۔کیاوزیراعظم کابینہ کی منظوری کےبغیرجو چاہےکرسکتاہے؟۔

جسٹس ثاقب نثارکےاستفسار پرحکومتی وکیل نے جواب دیاہروفاقی وزیروفاقی حکومت کہلائے گا،حکومتی امورکےلیےمضبوط وزیراعظم کی ضرورت ہوتی ہے۔

واضح رہے کہ سپریم کورٹ نے وزیراعظم نواز شریف کی جانب سے کابینہ کو بائی پاس کرنے کے معاملے پروفاق کی نظر ثانی اپیل خارج کردی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں