The news is by your side.

Advertisement

دنیا کشمیر سے آنکھیں  نہیں چرا سکتی، بھارتی مظالم نہ رُکے، تو جنگ کا خطرہ ہے: عمران خان

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ دنیا کشمیر سے آنکھیں چرا  نہیں سکتی، بھارتی مظالم نہ روکےگئے، تو جنگ کا خطرہ ہے.

ان خیالات کا اظہار انھوں نے نیویارک ٹائمز میں اپنے آرٹیکل میں کیا.  وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ کشمیر  میں ہونے والے مظالم پر دو ا یٹمی قوتیں براہ راست جنگ کی طرف جاسکتی ہیں، دنیا کو یاد رکھنا چاہیے کہ خطے کے دونوں ممالک ایٹمی طاقت ہیں.

انھوں نے کہا کہ وزیراعظم بننے کے بعد پہلی ترجیح امن کا فروغ، غربت کا خاتمہ ہے، بھارت سے بہتر تعلقات، مسئلہ کشمیر حل کرنے کی کوشش کی، پلوامہ حملہ کشمیری نے کیا مگر بھارت نے فوری پاکستان پر الزام لگایا، ثبوت مانگے، تو مودی نے بھارتی ایئرفورس کےجہازبھیجے. پاک فضائیہ نے بھارت کا ایک طیارہ گرایا اور پائلٹ حراست میں لیا، بھارت کو پیغام دیا کہ دفاع کے لئےکچھ بھی کرسکتے ہیں، مگر جواب میں جانی نقصان نہیں کیا.

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ نریندر مودی کو الیکشن جیتنے پر مبارک با د دی تھی، جنوبی ایشیا میں امن وترقی کے لئے کام کرنے پیغام بھی دیا، ڈائیلاگ کی بحالی کے لئے نریندر مودی کو خط بھی لکھا، لگتا ہے، مودی نے ہماری امن کی خواہش کومجبوری سمجھا.

مودی سن لو ! پاک فوج تیار ہے ، ہم اینٹ کاجواب پتھر سے دیں گے ، وزیراعظم عمران خان

انھوں نے لکھا کہ مودی اور ان کے وزرا ایسی جماعت کے رکن ہیں، جو ہٹلر سےمتاثر ہے، آر ایس ایس دہشت گرد جماعت ہے، اس کی بنیاد مسلمانوں کے خلاف نفرت ہے، مودی کے پہلے دور میں مسلم، عیسائیوں کو ہندو انتہا پسندوں نے تشدد کا نشانہ بنایا، 5 اگست کو مودی حکومت نے مقبوضہ کشمیر کی حیثیت بدلنے کی کوشش کی، آرٹیکل370 اور 35 اے کا خاتمہ بھارتی آئین کے تحت بھی غیرقانونی ہے، آج ہزاروں گرفتار کشمیری پوری بھارت کی جیلوں میں قید ہیں.

بھارتی وزیردفاع نے پہلے ہی دبے الفاظ میں ایٹمی حملے کی دھمکی دے رکھی ہے، ایٹمی ہتھیار کے استعمال میں پہل نہ کرنے کے بھارتی مؤقف کو پہلے بھی شک کی نگاہ سے دیکھتے تھے، جنوبی ایشیا پر ایٹمی جنگ کے بادل منڈلا رہے ہیں، بھارت کوبات چیت کی طرف آنا پڑے گا.

ان کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے ہم نے کئی آپشنزتیارکر رکھے ہیں، مسئلہ کشمیر پر یواین قرار دادیں، نہرو کے وعدوں کو مدنظر رکھنا ہوگا.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں