The news is by your side.

پنجاب میں تحریک عدم اعتماد کی صورت میں ن لیگ کا مطلوبہ تعداد پوری کرنا انتہائی مشکل

لاہور : پنجاب میں تحریک عدم اعتماد کی صورت میں ن لیگ کا مطلوبہ تعداد پوری کرنا انتہائی مشکل ہوگیا، تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کیلئے 186 ارکان پورے کرنا ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب میں ان ہاؤس تبدیلی کے معاملے پر ن لیگ کو دوہری مشکلات کا سامنا ہے ، تحریک عدم اعتماد کی صورت میں ن لیگ کا مطلوبہ تعداد پوری کرنا انتہائی مشکل ہوگیا۔

ایوان میں تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کیلئے 186 ارکان پورے کرنا ہوں گے، اسپیکر پنجاب اسمبلی سبطین خان نے ن لیگ کے 18 ارکان معطل کر رکھے ہیں۔

ن لیگ کے 18 ارکان پر 15 اجلاسوں میں شرکت پر پابندی عائد ہے ، ن لیگ نے اسپیکر کے اس اقدام کے خلاف لاہور ہائی کورٹ رجوع کیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ رولز آف پروسیجر کے تحت تحریک عدم اعتماد کے لئے 18 ارکان کردار ادا نہیں کرسکتے، تحریک عدم اعتماد تاحال پیش نہ ہونے میں رکاوٹ معطل ارکان ہیں، قانونی ماہرین کی رائے کی روشنی میں ن لیگ اگلا قدم اٹھائے گی۔

پنجاب اسمبلی کے 371 کے ایوان میں تحریک انصاف 180 ارکان ہیں ، تحریک انصاف کو مسلم لیگ ق کے 10 ارکان کی حمایت حاصل ہے۔

پنجاب میں حکومتی اتحاد کو 190 کے ہندسے پر برتری حاصل ہے جبکہ پنجاب میں اپوزیشن اتحاد 180 ارکان کی حمایت حاصل ہے۔

ن لیگ167،پیپلز پارٹی 7،آزاد ارکان 5 اور راہ حق پارٹی کا ایک رکن ہے ، اپوزیشن اتحاد کوعدم اعتماد کی کامیابی کیلئےاسوقت 24 ارکان کی حمایت درکار ہوگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں