The news is by your side.

Advertisement

آزادی مارچ‌: کیا ن لیگ دو دھڑوں میں تقسیم ہوگئی؟

لاہور: مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ نے مسلم لیگ ن کو دو  واضح حصوں میں تقسیم کر دیا.

تفصیلات کے مطابق حکومت مخالف تحریک سے متعلق ن لیگ میں دو آرا پائی جاتی ہیں، پارٹی اجلاس میں پہلی باردونوں طرف سےکھل کر اختلافات سامنے آئے.

شہبازشریف، خواجہ آصف، رانا تنویر گروپ نے لاک ڈاؤن پر تحفظات کا اظہار کیا ہے.

پارٹی ذرائع کے مطابق شہباز شریف نے سوال کیا  کہ اگر لاک ڈاؤن ناکام ہوا، تو ہم کہاں کھڑے ہوں گے، اس طرح کے اقدام سے مارشل لا کا خطرہ بھی پیدا ہو سکتا ہے.

دوسری جانب مشاہد اللہ ،جاوید لطیف، محمد زبیر، مرتضیٰ عباسی نے لاک ڈاؤن کی حمایت کی ہے، مریم نواز کے حامی گروپ نے کہا کہ اگر کارکنوں نے شمولیت اختیارکرلی، تو پھر پارٹی کہاں کھڑی ہوگی.

مزید پڑھیں: فیصلہ کن میدان میں سب ایک نظر آئیں گے: مولانا فضل الرحمان، احسن اقبال کی پریس کانفرنس

اجلاس میں خواجہ آصف کی جانب سے مذہبی کارڈ استعمال کرنے کی مخالفت کی گئی، انھوں نے ن لیگ کے پلیٹ فارم سے تحریک شروع کرنے کی تجویز دی گئی ہے.

محمد زبیر نے آزادی مارچ سے لاتعلقی پر تحفظات ظاہر کیے ہیں، انھوں نے اجلاس میں سوال اٹھایا کہ آزادی مارچ کی حمایت نہیں کرنی تویہاں کیوں بیٹھے ہیں.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں