The news is by your side.

Advertisement

حقیقی آزادی مارچ : ڈاکٹر یاسمین راشد اور عندلیب عباس کو حراست میں لے لیا گیا

لاہور: پولیس نے تحریک انصاف کی رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد اور عندلیب عباس کو حراست میں لے لیا اور نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔

تفصیلات کے مطابق حقیقی آزادی مارچ کے موقع پر پولیس کی جانب سے تحریک انصاف کی رہنماؤں کی گرفتاریوں کا سلسلہ جاری ہے ، پولیس نے ٹمبر مارکیٹ سے یاسمین راشد اور عندلیب عباس کو حراست میں لے لیا۔

لیڈی پولیس اہلکاروں نے دونوں رہنماؤں کو حراست میں لیا ، پولیس نے یاسمین راشد اور عندلیب عباس کو گھیرے میں لے رکھا ، دونوں رہنماؤں کو حراست میں لینے سے قبل شیلنگ سےکارکنوں کو ہٹایا گیا تھا۔

پولیس نے مکمل حکمت عملی سےیاسمین راشداورعندلیب عباس کو حراست میں لیا ، جس کے بعد دونوں خواتین کو نامعلوم مقام پر منتقل کردیا۔

تحریک انصاف کے رہنما قاسم خان سوری نے ٹوئٹ میں دونوں خواتین رہنماؤں کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا بزرگ رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد،عندلیب عباس کو گرفتار کیا گیا ، فاشسٹ امپورٹڈ حکومت کے غنڈوں اور پنجاب پولیس نے گرفتار کیا، رہنماؤں کو شہباز شریف، مریم نواز،حمزہ شہباز کے حکم پر گرفتار کیا گیا۔

اس سے قبل بھی تحریک انصاف کی رہنما ڈاکٹریاسمین راشد کے ساتھ پولیس نے شدید بد تمیزی کی اور ان کےڈرائیور کوحراست میں لے لیا تھا جبکہ نقاب پوش اہلکار یاسمین راشد کی گاڑی پر بھی پِل پڑے اور دیکھتے ہی ڈنڈے برسانا شروع کردیے۔

اس حوالے سے ڈاکٹریاسمین راشد نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ پولیس والوں نے بہت زیادتی کی، پہلے مرد اہلکاروں نے مجھے گاڑی سے گھسیٹ کر باہر نکالنے کی کوشش کی، اس کے بعد گاڑی کی چابی چھیننے کی کوشش کی جبکہ میرے ہاتھوں کو مروڑا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں