The news is by your side.

Advertisement

بھارتی فوج میں ناقص انتظامات کا بھانڈا پھوٹ گیا

نئی دہلی: بھارتی آڈیٹر جنرل کی رپورٹ نے سیاچن بارڈر پر تعینات بھارتی فوج کی حالت زار آشکار کردی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق کامپٹرولر اینڈ آڈیٹر جنرل (سی اے جی) کی تازہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سیاچن بارڈر پر تعینات بھارتی فوجیوں کو خوراک اور وردی کی کمی کا سامنا ہے۔

رپورٹ کے مطابق بھارتی فوج برفانی علاقے کے خاص قسم کے گاگلز سے محروم ہیں، بھارتی فوجیوں کے پاس مخصوص جوتے بھی نہیں ہیں، رپورٹ بھارتی ایوان بالا میں پیش کردی گئی۔

خیال رہے کہ بھارت میں سی اے جی آڈٹ کا مرکزی سرکاری ادارہ ہے۔

رپورٹ میں یہ بھی انکشاف کیا گیا ہے کہ اس وقت سیاچن، لداخ اور ڈوکلام میں موجود بھارتی فوجیوں کو خوراک کی کمی کا بھی سامنا ہے۔ 18 سے 32 ہزار فٹ بلندی والے سیاچن اور دوسرے برفیلے فارورڈ پوسٹ پر اہلکاروں کی زندگی اجیرن ہوگئی۔

بھارت کا جنگی جنون، دفاعی بجٹ میں کھربوں روپے کا اضافہ

واضح رہے کہ 2017 میں بھارتی فوجی اہلکار تیج بہادر یادیو نے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو جاری کی تھی جس میں اس نے بھارتی فوجی اہلکاروں کے ساتھ ہونے والے ناروا سلوک کا پردہ فاش کیا تھا، اپنی ویڈیو میں اس کا کہنا تھا کہ ہمیں ملنے والا کھانا افسران کھا جاتے ہیں یا پھر بازار میں بیچ دیا جاتا ہے۔

دوسری جانب بھارت نے اپنے دفاعی بجٹ میں بھی اضافہ کرلیا ہے لیکن اس کے باوجود اہلکاروں کو بنیادی سہولیات فراہم نہیں کی جارہی ہیں۔ ماضی میں بھارتی فوج میں کرپشن کے الزامات کا بھی انکشاف ہوچکا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں