site
stats
پاکستان

پوپ فرانسس نے ’مسلمان مہاجرین‘ کے قدم چوم لیے

ویٹیکن سٹی: عیسائیوں کے روحانی پیشوا پوپ فرانسس نے مسلم، کرسچن اورہندو مہاجرین کے پیردھلا کران کے قدموں کو چوما اورکہا کہ یہ سب ایک ہی خدا کے ماننے والے ہیں، ان کا یہ عمل انتہائی اہم ہے جب کہ برسلز حملوں کے بعد یورپ میں مسلمان مخالف جذبات میں اضافہ ہورہا ہے۔

پوپ فرانسس نے روم سے باہر کے مضافاتی علاقے ’کاسٹیلنوو ڈی پورٹو‘ میں پناہ گزینوں کے کیمپ پرہونے والے قتل عام کی انتہائی سخت الفاظ میں مذمت کی۔

واضح رہے کہ عیسائی روایات کے مطابق ’’حضرت عیسٰی علیہ السلام نے مصلوب ہونے سے قبل اپنے حواریوں کے پیردھلائے تھے‘‘، لہذا اسے ایک مذہبی رسم اور خدمت کا استعارہ سمجھا جاتا ہے۔

پوپ فرانس کے مطابق ان کا یہ عمل برسلز حملوں میں ملوث انسانیت دشمنوں کی جانب سے دنیا کو دیے جانے والے تباہی کے پیغام کو رد کرکے اقوامِ عالم کو انسانیت کا سب دے گا۔

ان کا کہناتھا کہ’’ہمارے مذاہب اور ثقافتیں جدا جدا ہہیں لیکن ہم بھائی ہیں اورامن کے ساتھ رہنا چاہتے ہیں‘‘۔

مہاجرین کی آنکھوں میں اس وقت آنسو بھرآئے اوروہ پھوٹ پھوٹ کر رو پڑے جب پوپ فرانسس نے ان کے سامنے کھل کر ان کے پیروں پر مقدس پانی ڈال کر انہیں صاف کیا اور پھر چوم لیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top