The news is by your side.

Advertisement

امریکا: ماسک کے جھگڑے پر حاملہ خاتون کو جہاز سے اتار دیا گیا

واشنگٹن: امریکا میں ایک خاتون کو جہاز سے اس لیے بے دخل کردیا گیا کیونکہ انہوں نے 2 سالہ بیٹی کو کھانا کھلانے کے لیے اس کا ماسک اتار دیا تھا۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق امریکی ریاست نیو جرسی کے ایئرپورٹ سے اڑنے والی پرواز سے ایک حاملہ خاتون کو بچوں سمیت جہاز سے اتار دیا گیا۔

جہاز کے عملے نے حاملہ خاتون کو اس کی کمسن بیٹی کی جانب سے فیس ماسک نہ پہننے پر جہاز سے اتار دیا جو نیو جرسی سے اپنے گھر فلوریڈا جا رہی تھی۔

خاتون جہاز کے عملے سے درخواست کرتی رہی کہ وہ بیٹی کو دہی کھلا کر ماسک پہنا دے گی تاہم عملے نے ان کی ایک نہ سنی اور سات ماہ کی حاملہ خاتون کو اس کے 2 کمسن بچوں سمیت جہاز سے بے دخل کر دیا۔

بعد ازاں متاثرہ خاتون نے ایک امریکی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے بتایا کہ انہیں صرف اس لیے جہاز سے اتارا گیا کیونکہ ان کی 2 سالہ بیٹی نے ماسک نہیں پہنا تھا۔

خاتون نے بتایا کہ میرے ساتھ میرا 7 سالہ بیٹا بھی موجود تھا جسے خاص توجہ کی ضرورت رہتی ہے کیونکہ زیادہ دیر تک منہ ڈھانپنے سے اسے دورے پڑ سکتے ہیں۔

سوشل میڈیا پر متاثرہ خاتون کی ویڈیو بھی گردش کر رہی ہے جس میں واضح طور پر دیکھا جا سکتا ہے کہ جہاز کا عملہ خاتون کو اس وقت جہاز سے نکلنے پر مجبور کر رہا ہے جب وہ اپنی بیٹی کو گود میں بٹھا کر کھانا کھلانے میں مصروف ہے۔

اس موقع پر جہاز میں موجود دیگر مسافروں نے بھی عملے سے بحث کی اور کہا کہ کھانا کھا کر بچی ماسک پہن لے گی لیکن عملے نے ایک نہ سنی اور خاتون کو باہر نکال کر ہی دم لیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں